.

خبردار! ایران پر سے پابندیاں نہ اٹھائی جائیں: امریکی جنرل کی ٹرمپ کو نصیحت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی فوج کے سابق وائس چیف آف اسٹاف جنرل جیک کین نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے پُر زور سفارش کی ہے کہ وہ کرونا وائرس کے پھیلاؤ کے باوجود ایران پر عائد پابندیاں برقرار رکھیں۔ امریکی چینل "فوكس نيوز" کو دیے گئے خصوصی انٹرویو میں ان کا کہنا تھا کہ ایران اس سے قبل کبھی اتنا کمزور نہیں ہوا۔ سابق جنرل نے باور کرایا کہ امریکا کو ان پابندیوں سے دست بردار نہیں ہونا چاہیے بلکہ اس کے برعکس پابندیوں میں اضافے کے مواقع تلاش کرنا ہوں گے۔

جنرل کین کے مطابق کرونا وائرس نے ایرانی عوام کو ایک منجدھار میں ڈال دیا ہے اور وہ اس بحران سے نمٹنے میں مزاحمت کا سامنا کر رہے ہیں۔

یاد رہے کہ کرونا وائرس نے ایران میں اب تک ہزاروں افراد کی جان لے لی ہے۔ بعض حلقوں نے ملک کے اندر اموات کی تعداد میں اضافے کا اندیشہ ظاہر کیا ہے۔ ایرانی وزارت صحت کے ترجمان کیانوش جہانپور نے جمعے کے روز اعلان میں بتایا کہ گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کرونا کے سبب مزید 134 افراد چل بسے۔ اس طرح اس مہلک وائرس سے موت کا شکار ہونے والے افراد کی مجموعی تعداد بڑھ کر 3294 تک پہنچ گئی ہے۔

سرکاری ٹیلی ویژن کے مطابق ملک میں ملک میں کرونا کے تصدیق شدہ کیسوں کی تعداد 53183 ہو چکی ہے۔ ان میں 4035 افراد کی حالت تشویش ناک ہے۔ اب تک کرونا کے 17935 مریض صحت یاب ہو چکے ہیں۔

واضح رہے کہ ایران مشرق وسطی میں کرونا وائرس سے سب سے زیادہ متاثر ہونے والا ملک ہے۔