.

بھارت: وباء کے دنوں میں پیدا ہونے والے جڑواں بچوں کے نام 'کرونا' اور کوویڈ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اس وقت پوری دنیا میں کرونا وبا ہی نہیں بلکہ اس بیماری سے متعلق خبروں کا بھی غلبہ ہے۔ کرونا کی ہلاکت خیزی کی خبروں کے ساتھ ساتھ اس وباء سے جڑی ایک خبر بھارت سے آئی ہے جہاں وباء کے دونوں میں پیدا ہونے والے نومولودوں کے نام 'کرونا' اور 'کوویڈ' رکھے گئے ہیں۔ جڑواں بچوں کے والد کا کہنا ہے کہ یہ نام ہمیں ان بچوں کی پیدائش کے وقت پیش آنے والی مشکلات کی یاد دلاتے رہیں گے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق جڑواں بچوں کی پیدائش کا یہ واقعہ بھارتی ریاست چھتیس گڑھ کے مرکزی شہر رائے پورم میں 27 مارچ کو پیش آیا۔ بچوں کی پیدائش بھارت میں کرونا کی وجہ سے لاک ڈائون کے دو روز بعد ہوئی۔

برطانوی اخبار دی انڈیپنڈنٹ کے مطابق جڑواں بچوں میں ایک بچہ اور ایک بچی ہے

بھارتی جوڑے کا ہے کہ بچوں کی پیدائش کے وقت انہیں کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑا اور بچوں کے نام کرونا اور کوویڈ رکھنے سے انہیں وہ پریشانی اپنی یاد دلاتی رہے گی۔

جڑواں بچوں کی ماں 2 سالہ پری ورما نے بتایا کہ انہیں کوئی مدد نہیں ملی اور ان کے کنبے کے افراد مکمل بندش کی وجہ سے رائے پور شہر نہیں پہنچ سکے تھے۔

اس نے کہا کہ جیسے ہی گاڑیاں چلنا بند ہوئیں تو ہمیں اسپتال جانا پڑا۔ ہم کافی تکلیف کے بعد رات گئے اسپتال پہنچے اور ان تمام مشکلات کے بعد بچوں کی پیدائش ہوئی۔ ہم چاہتے تھے کہ نام یاد رکھے اور انوکھے ہوں۔

والد ونئے ورما نے کہا کہ یہ دونوں نام خوبصورت ہیں۔ کرونا لاطینی زبان میں تاج کو کہاجاتا ہے۔ ہماری طرف سے بچوں کے یہ نام قوم کے لیے حفظات صحت اور صفائی کے لیے پیغام بھی ہے۔

خیال رہے کہ بھارتی حکومت نے کرونا وائرس کی وجہ سے 14 اپریل تک لاک ڈائون ہے اور ایک اعشاریہ تین ارب آبادی کو گھروں میں بند کردیا گیا ہے۔ بھارت میں اب تک کرونا کے متاثرین کی تعداد تین ہزار تک پہنچ چکی ہے جب کہ 68 افراد کرونا سے ہلاک ہوچکےہیں۔