.

کرونا وائرس اپنے اثرات میں ایک نیا ورلڈ آرڈر ثابت ہو گا: ہنری کسنجر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سابق امریکی وزیر خارجہ اور امریکی پالیسیوں کے ماہر ھنری کسنجر نے خبردار کیا ہے کہ کرونا کی وبا عارضی نہیں بلکہ اس کے تباہ کن معاشی معاشرتی اثرات آنے والی نسلوں میں بھی محسوس کیے جائیں گے۔ ان کا کہنا ہے کہ اپنے اثرات کی بناء پر کرونا کی وبا ایک نیا ورلڈ آرڈر ثابت ہوگی۔

خیال رہے کہ ھنری کسنجر سابق امریکی صدور نکسن اور فورڈ کے دور میں امریکا کے وزیر خارجہ رہ چکے ہیں اور امریکی سیاست میں ان کی بات کو کافی اہمیت دی جاتی ہے۔ انہوں نے کرونا کے منفی اثرات کے حوالے سے خطرے کی گھنٹی بجا کربالخصوص امریکا اور بالعموم پوری دنیا کو بیدار کرنے کی کوشش کی ہے۔

انہوں نے خبر دار کیا کہ کرونا وائرس سےعمرانی معاہدوں کا شیرازہ بکھرتا دکھائی دے رہا ہے۔ کرونا کے بعد کی دنیا اس سے پہلے کی دنیا سے مختلف ہوگی اور میری نگاہ میں کرونا آنے والے دور میں ایک نیا 'ورلڈ آرڈر' ثابت ہوگا۔ امریکا اور پوری دنیا میں معاشی افراتفری پھیلنے اور بڑے پیمانے پرمعاشی تبدیلیوں کا بھی عندیہ دیا۔

انہوں نے بحران سے نمٹنے کے لیے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی انتظامیہ کی کاوشوں کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ کرونا کی شکل میں ایک نیا بین الاقوامی آرڈر تشکیل پا رہا ہے۔ انہوں نے کرونا کے نتیجے میں پوری دنیا میں آنے والی تبدیلیوں کے لیے تمام ممالک اور اقوام کو تیار رہنے پر زور دیا۔

'بیٹل آف بلگ'

ھنری کسنجر نے امریکن وال اسٹریٹ جرنل میں شائع ایک مضمون میں لکھا ہے کہ میں 'کوڈ ۔19' کی وبا کی حقیقت کو'بلیگ کی جنگ' کے مماثل سمجھتا ہوں۔ میں نے جوکچھ اس جنگ میں محسوس کیا وہ آج بھی محسوس کررہا ہوں۔ اس جنگ کے دوران میں 84 ویں انفنٹری ڈویژن میں ایک نوجوان افسر تھا۔

انہوں نے مزید کہا جیسے 1944 کے آخر میں ابھرتے ہوئے خطرے کا احساس تھا مگر اس خطرے کو اپنی آنکھ سے کوئی دیکھ نہیں سکتا تھا۔ آج بھی کچھ ایسی ہی کیفیت ہے۔ مگر اس دور اور آج کے درمیان بہت فرق ہے۔

انہوں نے مزید لکھا کہ فی الحال امریکا ایک منقسم ملک ہے۔ عالمی سطح اور دائرہ کار میں غیر معمولی رکاوٹوں کو دور کرنے کے لیے ایک موثر اور دور اندیش حکومت ضروری ہے۔ عوامی اعتماد کو برقرار رکھنا معاشرتی یکجہتی ، معاشروں کا ایک دوسرے سے رشتہ اور بین الاقوامی امن و استحکام کے لیے بہت ضروری ہے۔

کسنجر نے کہا کہ کورنا کے بعد دنیا کی ایک نئی صف بندی ہوگی، خوش حالی بھی لوٹے گی۔ استحکام بحال ہوگا۔ مگرکوویڈ ۔19 وبائی مرض کا خاتمہ ہو گا تو بہت سارے ممالک کے ادارے ناکام ہوتے نظر آئیں گے۔ کرونا سے پہلے کی دنیا بعد کی دنیا سے مختلف ہوگی۔