.

کرونا کے سبب دور ہو جانے والے جرمن اور سوئس شہریوں کی سرحد پر ملاقاتیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

کرونا وائرس کے پھیلاؤ کی رفتار سست بنانے کے لیے ان دنوں جرمنی اور سوئٹزرلینڈ نے اپنی مشترکہ سرحد کو بند کر رکھا ہے۔ اس حوالے سے جرمنی کے شہر کونسٹینس اور سوئٹزرلینڈ کے شہر کروزلنگن کو سرحدی باڑ کے ذریعے علاحدہ کیا گیا ہے۔

کونسٹینس شہر کے ساحل پر بنے تفریحی مقام پر جرمنی اور سوئٹرزلینڈ دونوں جانب کے لوگ آزادی کے ساتھ اس سرحدی پٹی کے راستے نقل و حرکت کرتے تھے جو نظر نہیں آتی۔ تاہم اب سب کچھ بدل چکا ہے۔ جرمنوں کی اکثریت سوئٹزرلینڈ نہیں جا سکتی جب کہ سوئٹزرلینڈ کے زیادہ تر باشندے جرمنی میں داخل نہیں ہو سکتے۔

Swiss German Distancing

اتوار کے روز اس سرحدی پٹی پر لوگوں کی ایک بڑی تعداد جمع ہو گئی۔ ان لوگوں نے دھات کی باڑ کے دونوں اطراف کھڑے ہو کر ایک دوسرے کو چھوئے بغیر صرف زبانی طور پر اپنی چاہت اور محبت کا اظہار کیا۔ کڑی دھوپ میں اپنے جذبات کا اظہار کرنے والوں میں پریمیوں کے علاوہ والدین اور ان کے بچے، بہن بھائی اور پرانے دوست شامل تھے۔

Swiss German Distancing

اس موقع پر سوئس شہری جان بیئر والٹر نے بتایا کہ وہ زیورچ سے ایک گھنٹے کی ڈرائیونگ کے بعد یہاں پہنچا تا کہ اپنی جرمن ساتھی خاتون مایا بولیچ سے ملاقات کر سکے۔ بولیچ بھی ڈھائی گھنٹے تک گاڑی چلا کر ہائڈل برگ کی جانب سے اس سرحد پر پہنچی تھی۔

Swiss German Distancing

کرونا وائرس کے سبب یہ سرحدی علاقہ خالی اور سنسان ہو گیا ہے۔ حالیہ باڑ گذشتہ ماہ مارچ کے وسط میں لگائی گئی۔ اب یہ مقام اُن لوگوں کی ملاقات کا پوائنٹ بن چکا ہے جن کو کرونا کی وبا نے ایک دوسرے سے دُور کر دیا۔ واضح رہے کہ سوئٹزرلینڈ یورپی یونین کا رکن ملک نہیں ہے۔ تاہم بعض سمجھوتوں کے تحت سوئس شہریوں اور یورپی یونین بلاک کے شہریوں کو نارمل حالات میں بنا کسی قید سفر کی اجازت ہوتی ہے۔

Swiss German Distancing

گذشتہ ماہ سرحدی پٹی پر ایک باڑ لگائی گئی تھی۔ تاہم اس کے بعد بھی لوگ وہاں بیٹھ کر مشروبات کا تبادلہ کر رہے تھے ، تاش کھیل رہے تھے اور آپس میں معانقہ بھی کر لیتے تھے۔ اس کے نتیجے میں ذمے داران نے کچھ فاصلے سے دوسری باڑ بھی نصب کر دی۔

Swiss German Distancing

سوئٹزرلینڈ میں کرونا وائرس سے اب تک 559 افراد کی جانیں جا چکی ہیں۔ وائرس کے مجموعی کیسوں کی تعداد 21100 ہے۔ ادھر جرمنی میں کرونا سے تقریبا 92 ہزار افراد متاثر ہو چکے ہیں۔ ان میں سے 1342 افراد دنیا سے رخصت ہو گئے۔

Swiss German Distancing

اس وقت جرمن اور سوئس شہریوں میں صرف اُن لوگوں کو سرحد پار کرنے کی اجازت ہے جو دوسرے ملک میں کام کرتے ہیں۔ ان کے سوا بقیہ تمام افراد کے لیے سرحد پار جانا ممنوع ہے۔

Swiss German Distancing