.

آلودگی میں کمی، برسوں بعد بھارت کشور ہندوستان 'کوہ ہمالیہ' کے نظارے نمایاں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فضائی آلودگی کے نتیجے میں برسوں سے بھارت میں کوہ ہمالیہ کی فلک بوس چوٹیوں کوں قرب جوار کے مکینوں سے چھپا دیا تھا مگر حالیہ ہفتوں کے دوران کرونا کی وجہ سے ہونے والے لاک ڈائون کا ایک فائدہ یہ ہوا ہے کہ فضائی آلودگی میں غیرمعمولی کمی نے کوہ ہمالیہ کو ایک بار پھر توجہ کا مرکز بنا دیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق کوہ ہمالیہ سلسلے میں بھارتی پنجاب کے شہر جالندھر سے 200 کلو میٹر دور مائونٹ ایورسٹ واقع ہے مگر بھارت کی ایک ارب تیس کروڑ کی آبادی گذشتہ 30 برسوں سے کوہ ہمالیہ کی چوٹیوں کے نظاروں سے محروم تھی۔ حالیہ عرصے میں ملک میں ہونے والک ڈائون اور فضائی آلودگی میں کمی نے ہمالیہ کے قابل دید مناظر ایک بار پھرنمایاں کردیے ہیں۔

لوگ کوہ ہمالیہ کےنظاروں سے بہت زیادہ متاثر ہیں اور ایک ان کی تصاویر اور ویڈیوز انٹرنیٹ پر شیئر کر رہا ہے حالانکہ اس سے قبل ہمالیہ کے برہ راست نظاروں کی کوئی صورت نہیں تھی اور لوگ صرف انٹرنیٹ پر اس کی تصاویر دیکھتے تھے۔

بھارت کے سابق کریکٹر 39 سالہ ہربھجن سنگھ کا کہنا ہے کہ اس نے اپنے گھر سے پہلی بار کوہ ہمالیہ کا نظارہ کیا۔ آج تک کوہ ہمالیہ کی یہ خوبصورت فضائی آلودگی کی وجہ سے آنکھوں سے اوجھل رہی ہے اور ہم لوگ صرف تصاویر اور ویڈیوز ہی میں ان مقامات کو دیکھ پاتے تھے۔

خیال رہے کہ بھارت میں کرونا وائرس کی وباء پھیلنے کے بعد حکومت نے 21 روزہ لاک ڈائون کیا ہے جو 14 اپریل تک جاری رہے گا۔ بھارتی حکومت کا کہنا ہے کہ لاک ڈائون کی مدت میں اضافہ ہوسکتا ہے۔ لاک ڈائون کے نتیجے میں بھارت میں سڑکوں پر گاڑیاں چلنا بند ہوگئی ہیں۔ فضائی سروس تعطل کا شکار ہے اور دھواں چھوڑنے والے کارخانے بھی بند ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ آلودگی سے اٹے بھارت میں فضائی آلودگی میں غیرمعمولی کمی آئی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں