.

سعودی بنکوں کو اے ٹی ایم کارڈوں کی تجدید اور صارفین کے اکاؤنٹ معطل نہ کرنے کی ہدایت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی مانیٹری اتھارٹی ( ساما ، مرکزی بنک) نے بنکوں کو صارفین کے اے ٹی ایم کارڈوں کی میعاد میں از خود توسیع کی ہدایت کی ہے اور کہا ہے کہ جن صارفین کے کارڈ 2 جون 2020 تک ختم ہونے والے ہیں،ان کی تجدید کردی جائے گی۔

ساما نے قومی شناختی کارڈوں کی میعاد ختم ہونے یا غیر فعال ہونے کی صورت میں بھی بنک صارفین کے کھاتوں کو بند نہ کرنے کی ہدایت کی ہے۔

سعودی عرب کی مالیاتی اتھارٹی نے یہ احکامات کرونا وائرس کی وبا کو پھیلنے سے روکنے کے لیے احتیاطی اقدامات کے اثرات کے پیش نظرجاری کیے ہیں۔ان اقدامات کے تحت لوگوں کی آزادانہ نقل وحرکت پر پابندی عاید ہے اور وہ اپنے دفتری کام کے سلسلے میں بنکوں یا دفاتر میں نہیں جاسکتے ہیں۔

سعودی وزارت صحت نے اتوار تک مملکت میں کرونا وائرس کے 4262 کیسوں اور 59 اموات کی تصدیق کی ہے۔سعودی حکومت نے گذشتہ ڈیڑھ ایک ماہ کے دوران میں کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے کئی ایک سخت اقدامات کیے ہیں۔

خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز کے ایک فرمان کے تحت سعودی حکومت نے کرفیو کی میعاد میں تاحکم ثانی توسیع کردی ہے۔سعودی عرب نے گذشتہ سوموار کو دارالحکومت الریاض سمیت پانچ شہروں تبوک ، الدمام ، ظہران ، الہفوف کے علاوہ چار گورنریوں جدہ ، طائف ، القطیف اور الخُبر میں دن رات کا کرفیو اور لاک ڈاؤن نافذ کیا تھا۔

سعودی حکومت نے قبل ازیں مکہ مکرمہ اور مدینہ منورہ میں 24 گھنٹے کا کرفیو اور مکمل لاک ڈاؤن نافذ کردیا تھا۔ الحرمین الشریفین (مسجد الحرام اور مسجد نبوی صلی اللہ علیہ وسلم) میں تاحکم ثانی عام لوگوں کا داخلہ بند ہے اور ان کے وہاں نمازیں ادا کرنے پر پابندی عاید ہے۔ان کے علاوہ دوسری مساجد میں بھی نمازوں کی پنج وقتہ ادائی پر پابندی عاید ہے۔

سعودی عرب نے گذشتہ ماہ کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے بڑے شاپنگ مالز اور کاروباری مراکز کو بند کردیا تھا،البتہ کھانے کی اشیاء کے اسٹور اور دواخانے کھلے ہیں۔سعودی حکام نے کیفے اور ریستورانوں میں کھانا دینے پر پابندی عاید کردی ہے لیکن انھیں اپنے صارفین کو گھروں یا دفاتر میں کھانے مہیا کرنے کی اجازت ہے۔