.

شاہ سلمان کا نجی شعبے کے لیے 129 ارب ریال کی امداد سمیت وسیع تر اقتصادی پیکج

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے ایک فرمان کے ذریعے نجی شعبے کی مالی معاونت کے لیے مجموعی طور پر 129 ارب ریال کی امداد سمیت ایک وسیع تر اقتصادی پیکج کی منظوری دی ہے۔

سعودی پریس ایجنسی (ایس پی اے) کے مطابق اس امدادی پیکج میں بعض مستثنیات ، ریلیف اقدامات اور نجی شعبے کے ملازمین کو تن خواہوں کی ادائی کے لیے رقوم شامل ہیں۔

اس امدادی پیکج سے قبل شاہ سلمان نے ایک فرمان کے تحت سعودی عرب میں نجی شعبے کی کمپنیوں کو ان کے ملازمین کی تن خواہوں کی ادائی کے لیے نو ارب ریال (دو ارب 40 کروڑ ڈالر) کی رقم دینے کا حکم دیا تھا تاکہ یہ کمپنیاں اپنے عملہ کو ملازمتوں سے فارغ نہ کریں۔

انھوں نے اس کے علاوہ 120 ارب ریال ( 31 ارب 90 کروڑ ڈالر) کے امدادی پیکج کا بھی اعلان کیا ہے۔اس کا مقصد کرونا وائرس کے معیشت پر منفی اثرات کو کم سے کم کرنے میں مدد دینا ہے۔

سعودی عرب نے بدھ تک کرونا وائرس کے 5862 مثبت کیسوں کی تصدیق کی ہے اور اس مہلک وائرس کا شکار79 افراد جان کی بازی ہار گئے ہیں۔اب تک اس مہلک وَبا کا شکار 931 افراد صحت یاب ہوچکے ہیں۔سعودی حکومت نے مملکت میں کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے بعض سخت اقدامات کیے ہیں اور بڑے شہروں میں 24 گھنٹے کا کرفیو اور لاک ڈاؤن نافذ کررکھا ہے۔

سعودی کابینہ نے منگل کے روز وزارت صحت کے لیے مختص کردہ نئے بجٹ کی بھی منظوری دی ہے اور کہا ہے کہ مملکت وزارت کو کرونا وائرس کے مریضوں کے علاج کے لیے طبی سامان ،آلات ،وینٹی لیٹرز، ٹیسٹنگ آلات اور اضافی بستر وغیرہ مہیا کرنے کی غرض سے تمام ضروری وسائل دے گی۔