.

کرونا وائرس سے نمٹنے کے لیے 50 ہزار فوجی مصروف عمل ہیں : امریکی وزیر دفاع

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی وزیر دفاع مارک ایسپر کا کہنا ہے کہ اس وقت امریکی عوام کو کرونا وائرس سے تحفظ فراہم کرنے کے لیے 50 ہزار سے زیادہ فوجی کام کر رہے ہیں۔

منگل کے روز ایک پریس کانفرنس میں انہوں نے بتایا کہ اس وبا کا مقابلہ کرنے کے لیے 6 ہزار ڈاکٹر طبی ٹیموں کی مدد میں مصروف ہیں۔

اس موقع پر ایسپر نے وزارت دفاع (پینٹاگان) کی جانب سے طبی مشنز کو نیویارک اور امریکا کی دیگر ریاستوں میں بھیجنے کا اعلان بھی کیا۔

انہوں نے کہا کہ وزارت دفاع ملک کی ریاستوں کو ضرورت کا تمام طبی سامان فراہم کرنے کا سلسلہ جاری رکھے گی۔ ان میں وینٹی لیٹرز اور حفاظتی ماسک اہم ترین ہیں۔

اب تک کرونا وائرس کے سبب امریکا میں 23500 سے زیادہ افراد موت کا شکار ہو چکے ہیں۔ وبائی مرض سے متاثرہ ممالک میں امریکا سرفہرست ہے۔

اس سے قبل امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے منگل کے روز کہا کہ امریکا عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) میں "بنیادی نوعیت کی تبدیلی" کے واسطے کوشاں ہے۔ اس دوران کرونا کے سنگین عالمی بحران کے موقع پر امریکا کی جانب سے یہ دھمکیاں بھی دی جا رہی ہیں کہ وہ ادارے کے لیے اپنی مالی معاونت کا سلسلہ موقوف کر دے گا۔

امریکا کو عالمی ادارہ صحت کے لیے عطیات فراہم کرنے والا سب سے بڑا ملک شمار کیا جاتا ہے۔ گذشتہ برس اس نے ادارے کو 40 کروڑ ڈالر پیش کیے تھے۔