.

سعودی عرب:کرونا وائرس کے 1147 نئے کیسوں کی تصدیق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب نے گذشتہ 24 گھنٹے میں کرونا وائرس کے 1147 نئے کیسوں کی تصدیق کی ہے۔سعودی وزارت صحت کے ترجمان کے مطابق مملکت میں اس مہلک وبا کا شکار ہونے والے افراد کی تعداد 11631 ہوگئی ہے۔

ترجمان ڈاکٹر محمد العبد العالی نے منگل کے روز بتایا ہے کہ 76 فی صد نئے کیس فیلڈ ٹیسٹنگ کے دوران میں ریکارڈ کیے گئے ہیں۔اس وقت 150 ٹیمیں ملک بھر میں گھر گھر جا کر ٹیسٹ کررہی ہیں اور اب تک پانچ لاکھ سے زیادہ افراد کے ٹیسٹ کیے جاچکے ہیں۔

ترجمان نے بتایا کہ کرونا وائرس کا شکار مزید پانچ افراد دم توڑ گئے ہیں اور اب متوفیوں کی تعداد 109 ہوگئی ہے۔انھوں نے وضاحت کی ہے کہ اس وقت سعودی عرب میں 9882 فعال کیس ہیں اور 1640 متاثرہ افراد صحت یاب ہوچکے ہیں۔

خطے میں سعودی عرب میں اب تک کرونا وائرس کے سب سے زیادہ کیسوں کی تصدیق ہوئی ہے۔ وہ خلیج تعاون کونسل (جی سی سی) کے رکن ممالک میں آبادی اور رقبے کے اعتبار سے سب سے بڑا ملک ہے۔اس کی آبادی تین کروڑ 47 لاکھ 60 ہزار سے زیادہ نفوس پرمشتمل ہے اور اس طرح اس کی آبادی جی سی سی کے دوسرے پانچ ممالک کی کل آبادی سے زیادہ ہے۔مملکت میں اب تک کرونا وائرس کے ہر دس لاکھ نفوس میں سے 141 کیس سامنے آئے ہیں۔

واضح رہے کہ سعودی وزیرصحت توفیق الربیعہ نے اپریل کے اوائل میں خبردار کیا تھا کہ مملکت میں آیندہ چند ہفتوں کے دوران میں کرونا وائرس کے کیسوں کی تعداد بڑھ کر دو لاکھ تک ہوسکتی ہے۔انھوں نے سعودی اور غیرملکی ماہرین کے چار تحقیقی مطالعات پر مبنی یہ اعداد وشمار جاری کیے تھے اور کہا تھا کہ مستقبل میں اس مہلک وائرس کے کیسوں کی تعداد کا انحصار ہر کسی کے تعاون اور حکومت کی جاری کردہ رہ نما ہدایات اور احتیاطی تدابیر پرعمل درآمد پر ہوگا۔

سعودی حکومت نے گذشتہ ڈیڑھ ایک ماہ کے دوران میں کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے لاک ڈاؤن سمیت کئی ایک سخت اقدامات کیے ہیں۔حکومت نے 6 اپریل کو دارالحکومت الریاض سمیت پانچ شہروں تبوک ، الدمام ، ظہران ، الہفوف کے علاوہ چار گورنریوں جدہ ، طائف ، القطیف اور الخُبر میں دن رات کا کرفیو اور لاک ڈاؤن نافذ کیا تھا۔مکہ مکرمہ اور مدینہ منورہ میں پہلے ہی 24 گھنٹے کا کرفیو اور مکمل لاک ڈاؤن نافذ تھا۔