.

کرونا کے صحت یاب مریض دوبارہ حملے سے محفوظ رہیں گے،ایسا کوئی ثبوت نہیں:ڈبلیو ایچ او

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عالمی ادارہ صحت ( ڈبلیو ایچ او) نے کہا ہے کہ اس وقت تک ایسا کوئی ثبوت سامنے نہیں آیا ہے جس سے یہ ظاہرہو کہ کرونا وائرس کاشکار صحت یاب ہونے والے مریض اس کے دوبارہ حملے سے محفوظ ہوگئے ہیں۔

ڈبلیو ایچ او نے ہفتے کے روز ایک بیان میں خبردار کیا ہے کہ ’’متاثرہ لوگوں کو ’’مدافعتی پاسپورٹس‘‘ یا ’’خطرے سے پاک سرٹی فیکیٹوں‘‘ کے اجرا سے گریز کیا جائے کیونکہ اس عمل سے کرونا وائرس پھیلنے کے خطرات میں اضافہ ہوسکتا ہے کیونکہ پہلے سے متاثرہ لوگ احتیاطی تدابیر کو نظرانداز کرسکتے ہیں۔‘‘

چلّی نے گذشتہ ہفتے یہ کہا تھا کہ وہ کرونا کے مرض سے صحت یاب ہونے والے افراد کو ’’صحت پاسپورٹس‘‘ کا اجرا شروع کردے گا۔

اس نے کہا تھا کہ کرونا وائرس کی بیماری میں مبتلا رہنے والے افراد کی اسکریننگ کی جائے گی اور یہ دیکھا جائے گا کہ ان میں وائرس سے محفوظ رہنے کے لیے مدافعتی نظام پیدا ہوچکا ہے۔اس طرح جن افراد میں اینٹی باڈیز پیدا ہو چکی ہوں گی تو وہ فوری طور پر افرادی قوت میں شامل ہوسکتے ہیں۔