.

سلامتی کونسل کا یمن کی وحدت، سالمیت اور خود مختاری برقرار رکھنے پر زور

یمنی حکومت کی طرف سے سلامتی کونسل کے بیان کا خیر مقدم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سلامتی کونسل نے جنوبی یمن میں عبوری انقلابی کونسل کی طرف سے بغاوت کرتے ہوئے جنوبی یمن کو خود مختار علاقہ قرار دینے پر گہری تشویش کا اظہار کیا ہے۔ سلامتی کونسل کی طرف سےجاری ہونے والے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ جنوبی یمن میں عبوری کونسل کی طرف سے خود مختاری کا اعلان خطرناک پیش رفت ہے۔ سلامتی کونسل یمن کی خود مختاری، سالمیت اور وحدت کی ضرورت پر زور دیتی ہے۔

دوسری طرف یمن کی آئینی حکومت نے سلامتی کونسل کے بیان کا خیر مقدم کیا ہے۔ یمنی حکومت نے بدھ کے روز جاری کردہ سلامتی کونسل کے اس بیان کا خیرمقدم کیا ہے جس میں نام نہاد عبوری کونسل کی جانب سے جنوبی یمن میں اپنا خود مختار علاقہ قائم کرنے کا اعلان کیا گیا تھا۔ سلامتی کونسل نے جنوبی یمن میں تازہ کشیدگی پر شدید تشویش کا اظہار کیا ہے۔ عالمی ادارے نے یمن کے اتحاد ، خودمختاری ، آزادی اور علاقائی سالمیت کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے فریقین پر سعودی عرب میں طے پائے امن سمجھوتے پرعمل درآمد کا مطالبہ کیا گیا ہے۔

یمن کی وزارت خارجہ نے عدن میں عبوری کونسل کے غیرآئینی اقدام پر سعودی عرب اور دوسرے برادر مسلمان ممالک کی طرف سے آنے والے رد عمل کا بھی خیر مقدم کیا ہے۔

خیال رہے کہ سعودی عرب اور دوسرے عرب ممالک نے عدن کی عبوری کونسل پر زور دیا ہے کہ وہ سرکاری تنصیبات اور دفاتر فوری طورپر خالی کرے اور گذشتہ برس الریاض میں طے پانے والے امن سمجھوتے کی شرائط پرعمل درآمد یقینی بنائے۔

یمنی حکومت نے عبوری کونسل کی طرف سے مسلح بغاوت ختم کرنے اور آئینی حکومت کی وفادری پر زور دینے کے ساتھ ساتھ سعودی عرب اور دوسرے عرب ممالک پر زور دیا ہے کہ وہ عبوری کونسل کو عدن میں بغاوت سے باز رکھنے کے لیے اپنا کردار ادا کریں۔

خیال رہے کہ جنوبی یمن میں قائم عبوری انقلابی کونسل نے حال ہی میں عدن اور اس کے اطراف کے علاقوں کو خود مختار علاقہ قرار دینے کا اعلان کرنے کے ساتھ وہاں پراپنی حکومت کے قیام کا دعویٰ کیا تھا۔ یمن کی آئینی حکومت نے اسے مسلح بغاوت قرار دیتے ہوئے سخت جوابی کارروائی کا عندیہ دیا ہے۔