.

یواے ای : کرونا وائرس سے سات اموات ، 552 نئے کیسوں کی تشخیص

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

متحدہ عرب امارات نے جمعرات کو کرونا وائرس کے 27 ہزار ٹیسٹ کرنے کی اطلاع دی ہے اور بتایا ہے کہ ان میں سے 552 افراد کے اس وائرس میں مبتلا ہونے کی تشخیص ہوئی ہے۔

یو اے ای کی سرکاری خبررساں ایجنسی وام کے مطابق گذشتہ 24 گھنٹے میں کرونا وائرس کا شکار سات افراد چل بسے ہیں جبکہ مزید ایک سو مریض صحت یاب ہوگئے ہیں۔

یو اے ای نے اب تک کرونا کے 12481 کیسوں اور 105 اموات کی تصدیق کی ہے جبکہ 2249 افراد صحت یاب ہوچکے ہیں۔

متحدہ عرب امارات نے مارچ کے اوائل میں کرونا وائرس کی وَبا کو پھیلنے سے روکنے کے لیے سخت پابندیاں عاید کی تھیں لیکن رمضان المبارک میں ان پابندیوں کو بتدریج نرم کرنا شروع کردیا ہے اور اس نے سخت احتیاطی تدابیر میں ہفتہ دو مئی سے بعض اہم سرکاری دفاتر اور خدمات کے مراکز کو کھولنے کا اعلان کیا ہے۔

یواے ای کی وزارت برائے انسانی وسائل اور امارات نے کہا ہے کہ وہ دو مئی سے اپنے تمام خدمات مراکز کو کھول دے گی۔وہ صبح نو بجے سے سہ پہر تین بجے تک صارفین کے لیے کھلے رہیں گے۔اس دوران میں ملازمین اور صارفین دونوں کے تحفظ کے لیے سخت احتیاطی تدابیر اختیار کی جائیں گی۔ واضح رہے کہ اس وزارت نے 29 مارچ کو کرونا کی وبا کو پھیلنے سے روکنے کے لیے اپنے دفاتر بند کردیے تھے۔

وزارت نے اپنے خدمات مراکز میں آنے والے صارفین کے لیے بعض رہ نما اصولوں کا اعلان کیا ہے اور ان سے کہا ہے کہ چہرے پر ماسک ، ہاتھوں پر دستانے پہن کر آئیں اور حکومت کی جاری کردہ ہدایات پر عمل درآمد کریں۔بچّوں اور ضعیف العمر افراد کو ان مراکز میں داخل ہونے کی اجازت نہیں ہوگی۔

امارات کے شعبہ اقتصادیات دبئی اکانومی نے اتوار کو یہ اعلان کیا تھا کہ حکومت کے لین دین کے مراکز سماجی فاصلے سے متعلق قواعد کی پاسداری کرتے ہوئے اپنا کام شروع کرسکتے ہیں۔ٹرانزیکشن کاؤنٹرز صبح نو بجے سے سہ پہر تین بجے تک کھلے رہیں گے۔

ان دفاتر کے ساتھ صارفین کو آن لائن اور دوسرے فاصلاتی طریقوں سے بھی خدمات مہیا کرنے کا سلسلہ جاری رہے گا۔صارفین اور عملہ دونوں صفائی ،ستھرائی اور سماجی فاصلے کے لیے رہ نمااصولوں کا خیال رکھیں گے۔