.

کرونا وائرس: ایران بھر میں منگل سے تمام مساجد دوبارہ کھولنے کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران نے کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے عاید پابندیوں میں مزید نرمی کردی ہے اور منگل سے ملک بھر میں تمام مساجد کو دوبارہ کھولنے کا اعلان کیا ہے۔

ایران کی سرکاری خبررساں ایجنسی اریب نے اسلامی ترقیاتی تنظیم کے ڈائریکٹر محمد قُمی کے حوالے سے بتایا ہے کہ مساجد کو کھولنے کا فیصلہ وزارت صحت کے ساتھ مشاورت کے بعد کیا گیا ہے۔

ایرانی حکومت کے اس اعلان سے ایک روز قبل ہی صوبہ خوزستان میں کرونا وائرس کے نئے کیس سامنے آئے ہیں۔نیم سرکاری خبررساں ادارے تسنیم کے مطابق خوزستان کے ایک علاقے میں کرونا وائرس پھیلنے کے بعد لاک ڈاؤن نافذ کردیا گیا ہے۔اس نے صوبائی گورنر کے حوالے سے کہا ہے کہ صوبہ بھر میں کرونا وائرس کے کیسوں میں اضافہ ہو گیاہے۔

گذشتہ جمعہ کو ایران کے قریباً180 شہروں اور قصبوں میں نمازجمعہ کے اجتماعات منعقد ہوئے تھے۔تاہم دارالحکومت تہران اور بعض دوسرے شہروں میں نماز جمعہ کے اجتماعات پر بدستور پابندی عاید ہے۔

ایرانی صدر حسن روحانی نے اتوار کو آیندہ ہفتے سے اسکول دوبارہ کھولنے کا اعلان کیا ہے۔قبل ازیں ایرانی شہروں کے درمیان سفر پر عاید پابندی بھی ختم کی جاچکی ہے اور بڑے خریداری مراکز اور شاپنگ مالوں میں کاروباری سرگرمیاں بحال کی جارہی ہیں۔

ایرانی وزارت صحت کے ترجمان کیانوش جہانپور کے مطابق گذشتہ 24 گھنٹے میں کرونا وائرس سے 45 اموات ہوئی ہیں۔ملک میں اس مہلک وائرس سے ہلاکتوں کی تعداد 6685 ہوگئی ہے جبکہ اس کے تصدیق شدہ کیسوں کی تعداد 109286 ہوگئی ہے۔

واضح رہے کہ ایران مشرقِ وسطیٰ میں نئے کرونا وائرس سے سب سے زیادہ متاثر ہونے والا ملک ہے۔ ایرانی معیشت کرونا وائرس اور اس سے پہلے امریکا کی عاید کردہ پابندیوں کے نتیجے میں بُری طرح متاثر ہوئی ہے۔چناں چہ ایرانی حکام نے معیشت کا پہیّا چلتا رکھنے کے لیے معمولات زندگی پر عاید پابندیوں میں بتدریج نرمی شروع کردی ہے۔ تاہم محکمہ صحت کے حکام مسلسل خبردار کررہے ہیں کہ پابندیوں میں نرمی سے کرونا وائرس کے مریضوں کی تعداد میں دوبارہ اضافہ شروع ہوجائے گا۔

دریں اثناء ایرانی صدر نے صنعت ، معدنی وسائل اور تجارت کی وزارت میں تبدیلی کااعلان کیا ہے۔اس فیصلے کا مقصد قومی معیشت کی بحالی ہے۔انھوں نے حسین مدرس خیابانی کو رضا رحمانی کی جگہ وزارت کا نیا نگران سربراہ مقرر کیا ہے لیکن یہ نہیں بتایا ہے کہ رضا رحمانی کو کیوں برطرف کیا گیا ہے۔

ایرانی صدر نے خیابانی کو ہدایت کی ہے کہ ملک میں کار کی قیمتوں میں استحکام لائیں، ملکی پیداوار کی راہ میں حائل رکاوٹوں کو دور کریں اور تیل کے علاوہ باقی اشیاء کی برآمدات میں اضافہ کریں۔