.

روسی صدر پوتین کے ترجمان کرونا کا شکار، متاثرین کی تعداد بلند ترین سطح پر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

روس کی انٹرفیکس نیوز ایجنسی نے تصدیق کی ہے کہ کریملن کے ترجمان دمتری پیسکوف کے کرونا کے ٹیسٹ مثبت آئے ہیں۔ انہیں علاج کے لیے اسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔ پیسکوف نے انٹر فیکس کو بتایا کہ میں کرونا کی وجہ سے بیمار ہوں اور علاج کروا رہا ہوں۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ روسی صدر ولادی میر پوتین سے ان کی ملاقات کوئی ایک ماہ قبل ہوئی تھی۔

پیسکوف جو پوتین کے قریبی ساتھیوں میں شامل ہیں اور ان کے بیرون ملک دوروں میں ان کے ہمراہ رہے ہیں، چھ مئی سے منظر عام سے غائب تھے۔ انہوں نے چھ مئی کے بعد روزانہ کی بنیاد پر کوئی پریس کانفرنس نہیں کی۔

صدر ولادی میر پوتین ماسکو میں 'نوو یوگریو' میں اپنی رہائش گاہ سے باقاعدگی کے ساتھ اپنی کابینہ کے ویڈیو کانفرنس کے ذریعے اجلاس منعقد کرتے ہیں۔ مگر حالیہ ایام میں ان کے ترجمان کو ان اجلاسوں میں ںہیں دیکھا گیا۔

30 اپریل کو روسی وزیر اعظم میخائل میشوسٹن نے اعلان کیا کہ کرونا وائرس کے شبے میں وہ کچھ عرصے کے لیے گھر میں قرنطینہ میں رہں گے۔

روسی صدر ولادیمیر پوتین نے کہا کہ وزیراعظم کرونا وائرس سے صحت یاب ہو رہے ہیں۔ وہ ہر روز ان کے ساتھ بات چیت کرتے ہیں اور تمام فیصلوں کی تیاری میں حصہ لیتے ہیں۔

خبر رساں ادارے 'اے ایف پی' نے روس کے سرکاری اعدادوشمار کے حوالے سے بتایا ہے کہ روس میں اس وقت کرونا کی وبا اپنے نقطہ عروج پر ہے۔ روس میں کرونا کے متاثرین کی تعداد 2 لاکھ 32 ہزار 243 ہوگئی یے۔ کرونا متاثرین کے اعتبار سے رس اس وقت دنیا کا دوسرا بڑا ملک بن گیا ہے۔ امریکا میں 10 لاکھ 34 ہزار، روس میں 2 لاکھ 43 ہزار، اسپین میں 2 لاکھ 28 ہزار اور برطانیہ میں دو لاکھ 23 ہزار افراد کرونا کا شکار ہوئے ہیں۔

تاہم کرونا سے ہلاکتوں کے اعتبار سے امریکا اور روس میں کافی فرق ہے۔ روس میں کرونا کے متاثرین کی تعداد اگرچہ زیادہ ہے مگر اب تک ہلاکتیں 2116 ہوئی ہیں۔