.

حوثی باغیوں‌ نے غریبوں کے صدقات وخیرات بھی لوٹنا شروع کردیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کی آئینی حکومت کے خلاف سرگرام ایرانی حمایت یافتہ حوثی باغیوں کی طرف سے جنگ زدہ شہریوں اور غریب نادار افراد کے لیے بیرون ملک سے آنے والی امداد کی لوٹ مار کے ساتھ ساتھ اب غریبوں کے منہ سے ماہ صیام کے موقع پر جمع کیے گئے صدقات اور خیرات بھی چھیننا شروع کر دیے ہیں۔

العربیہ ڈاٹ‌ نیٹ کے مطابق ہر سال کی طرح اس سال بھی یمن کی تاجر برادری اور مخیر حضرات کی طرف سے غریب اور نادار شہریوں کے لیے صدقات اور خیرات کا اہتمام کیا گیا ہے مگر یہ صدقات مستحق شہریوں‌ تک نہیں پہنچ پاتے اور انہیں حوثی ملیشیا کے جنگجو لوٹ کر لے جاتے ہیں۔

مقامی ذرائع نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو بتایا کہ حوثی ملیشیا نے اپنے زیرتسلط علاقوں میں تاجروں اور مخیر شہریوں کو مستحق شہریوں‌ کو امداد فراہم کرنے سے روک دیا ہے اور کہا ہے کہ وہ صدقات کا مال اور رقوم حوثیوں کے قائم کردہ افراد کو فراہم کریں۔

ٌخیال رہے کہ یمن میں کئی سال سے جاری خانہ جنگی کے نتیجے میں لاکھوں افراد غربت کی لکیر سے نیچے زندگی گذارنے پر مجبور ہیں۔ حوثی ملیشیا کی طرف سے امدادی سامان کی لوٹ مار نے غریب اور نادار طبقے کی مشکلات میں مزید اضافہ کیا ہے۔

'نیوز یمن' ویب سائٹ کی رپورٹ کے مطابق حوثی ملیشیا نے گذشتہ منگل کو صنعاء میں السنیدار گروپ کی جانب سے نادار شہریوں کے لیے امداد کی تقسیم کی کوشش کی گئی تھی مگر حوثی ملیشیا نے مستحق شہریوں کو امداد کی فراہمی کی کوشش کرنے والے رضاکاروں کے خلاف کارروائی کرکے متعدد کو شہریوں کو حراست میں لے لیا تھا۔