.

کروناوائرس کی پابندیاں اورلاک ڈاؤن،دنیا بھر میں مسلمانوں نے عیدالفطر کیسے منائی ؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

دنیا بھر میں مسلمانوں نے اس مرتبہ کرونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کےلیے حکومتوں کی عاید کردہ پابندیوں اور لاک ڈاؤن میں عیدالفطر بالکل غیر روایتی انداز میں منائی ہے۔ بہت سے اسلامی اور غیراسلامی ممالک میں کرونا وائرس کے تعلق سے لاک ڈاؤن اور کرفیو نافذ ہے جس کی وجہ سے مسلمانوں نے اپنے گھروں ہی میں رہ کر عید منائی ہے اور بہت سے ممالک میں تو وہ عید کی نماز کے لیے مساجد یا عید گاہوں میں بھی نہیں جاسکے ہیں۔

البتہ اس مرتبہ ایک خاص بات یہ ہوئی ہے کہ دنیا کے ایک ارب 80 کروڑ مسلمانوں میں کی کثیر تعداد نے اتوار کو ایک ہی دن عید منائی ہے ۔ البتہ بھارت میں سوموار کو عید منائی جارہی ہے جہاں بیس کروڑ کے لگ بھگ مسلمان آباد ہیں اور وہ کسی بھی ملک میں مسلمانوں کی سب سے بڑی اقلیت ہیں۔

رمضان المبارک کے اختتام پر شوّال المکرم کا چاند نظر آنے کے ساتھ ہی عید کی خوشیوں کا آغاز ہوجاتا ہے اور بیشتر ممالک میں تین روز تک عید منائی جاتی ہے لیکن اس مرتبہ کرونا وائرس کے لاک ڈاؤن کی وجہ سے چاند رات پھیکی رہی ہے اور اسلامی ممالک کے بڑے شہروں میں عید کے پہلے روز گلیوں اور بازاروں میں کوئی زیادہ گھما گھمی اور رش نظر نہیں آرہا تھا۔

بعض ممالک کی حکومتوں نے عید پر مساجد کھولنے کی اجازت دے دی تھی اور مسلم عبادت گزاروں نے ایک دوسرے کے درمیان فاصلہ برقرار رکھتے ہوئے نماز عید ادا کی ہے۔ وہ اپنی میل ملاقاتوں میں بھی سماجی دوری اختیار کررہے ہیں۔

سعودی عرب ، عراق اور اردن سمیت بعض ممالک نے عید الفطر کے موقع پر کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے 24 گھنٹے کا کرفیو نافذ کررکھا ہے۔ تاہم بہت سی دیگر پابندیوں میں نرمی کردی ہے۔اسلامی ممالک میں عید کیسے منائی جارہی ہے،اس کی مختصر تفصیل یہاں بیان کی جارہی ہے:

سعودی عرب

الحرمین الشریفین کی مقدس سرزمین سعودی عرب میں حکومت کے اعلان کے مطابق مکمل لاک ڈاؤن نافذ ہے اور مکینوں کو صرف خوراک کی اشیاء اور ادویہ کی خریداری کے لیے گھروں سے باہر جانے کی اجازت ہے۔مکہ مکرمہ میں مسجد الحرام اور مدینہ منورہ میں مسجد نبوی صلی اللہ علیہ وسلم میں عید کے بڑے اجتماعات منعقد نہیں ہوئے۔

مکہ مکرمہ میں عیدالفطر کی نماز ادا کی جارہی ہے۔(فائل تصویر)

پاکستان

پاکستان میں جمعہ کو کراچی میں ایک مسافر طیارے کے حادثے کے بعد غم واندوہ کے ماحول میں عیدالفطر منائی گئی ہے۔ پاکستان کی قومی فضائی کمپنی کا ایک مسافر طیارہ لاہور سے کراچی پہنچ کر ہوائی اڈے کے نزدیک گر کر تباہ ہوگیا تھا۔اس حادثے میں ستانوے افراد جاں بحق ہوگئے تھے۔

لیکن گذشتہ کئی سال کے بعد پاکستان بھر میں پہلی مرتبہ ایک ہی دن عید الفطر منائی گئی ہے،ورنہ عام طور پر ملک میں دو دو یا تین تین عیدیں ہوتی رہی ہیں۔ حکومت نے عید سے قبل لاک ڈاؤن میں نرمی کردی تھی اور دکانیں اور کاروباری مراکز کھولنے کی اجازت دے دی تھی۔

ملک بھر کے شہروں، قصبوں اور دیہات میں مساجد اور عید گاہوں میں نماز عید کے بڑے اجتماعات منعقد ہوئے ہیں۔ نمازیوں نے کسی جگہ فاصلہ اختیار کیا اور کسی جگہ کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے پابندیوں کی بالکل بھی پاسداری نہیں کی اور انھوں نے قریب قریب کھڑے ہوکر نماز عید ادا کی ہے۔

مقبوضہ فلسطین

مقبوضہ بیت المقدس میں فلسطینیوں کی عید الفطر کے موقع پر اسرائیلی پولیس سے جھڑپ ہوئی ہے۔اسرائیلی پولیس نے کہا ہے کہ اس نے ایک ’’ غیر قانونی مظاہرے‘‘ کو منتشر کردیا ہے اور مسجد الاقصیٰ کے باہر دو افراد کو گرفتار کر لیا ہے۔

واضح رہے کہ اردن کے زیر انتظام مسلم وقف نے مارچ کے وسط میں کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے مسجد الاقصیٰ کو بند کردیا تھا اور اب اس کو عید کی چھٹیوں کے بعد کھولنے کا اعلان کیا گیا ہے۔بعض عبادت گزاروں نے نمازِ عید ادا کرنے کے لیے مسجد الاقصیٰ کے احاطے میں داخل ہونے کی کوشش کی تھی اور ان کی اسرائیلی پولیس سے جھڑپ ہوئی ہے۔

الاقصیٰ مسلمانوں کے نزدیک تیسرا متبرک مقام ہے اور یہاں عام حالات میں ہزاروں افراد نماز عید ادا کرنے کے لیے آتے ہیں۔

ایران

ایران کرونا وائرس کی وبا سے مشرقِ اوسط میں سب سے زیادہ متاثر ہوا ہے اور اس کی وزارت صحت نے اب تک اس وائرس سے 7000 سے زیادہ ہلاکتوں کی تصدیق کی ہے اور ایک لاکھ 30 ہزار سے زیادہ کیسوں کا اندراج کیا گیا ہے۔

ایرانی حکومت نے ملک کے بعض حصوں میں مساجد میں نماز ادا کرنے کی اجازت دے دی تھی لیکن دارالحکومت تہران میں سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای کی امامت میں عید کا سالانہ اجتماع منسوخ کردیا تھا۔

متحدہ عرب امارات

متحدہ عرب امارات نے کرونا وائرس کے تعلق سے عاید کردہ پابندیوں میں نرمی کردی ہے اور کاروباروں کو بتدرج کھولنے کی اجازت دے دی ہے لیکن مساجد کو عیدالفطر کے موقع پر بھی بند رکھنے کا فیصلہ کیا تھا۔اماراتی حکومت نے شہریوں اور تارکین وطن کو اپنے گھروں ہی نماز عید ادا کرنے کی ہدایت کی تھی۔

اردن اور لبنان

اردن اور لبنان کی حکومتوں نے عید الفطر کے پہلے روز مکمل لاک ڈاؤن نافذ کردیا تھا۔ان دونوں ملکوں کے شہروں کی ر شاہراہیں سنسان نظر آرہی تھیں اور دکانیں اور ریستوران بھی بند تھے۔عام طور پر عید کے موقع پر اردن میں کاروباری مراکز اور شاہراہوں میں بہت رش ہوتا ہے۔لبنان نے کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے سات جون تک لاک ڈاؤن نافذ کررکھا ہے۔

انڈونیشیا

اسلامی دنیا کے آبادی کے اعتبار سے سب سے بڑے ملک انڈونیشیا میں بھی عید الفطر سادگی سے منائی گئی ہے۔انڈونیشی حکومت نے اب تک کرونا وائرس سے 1350 ہلاکتوں اور قریباً 22 ہزار متاثرہ کیسوں کی اطلاع دی ہے۔اس نے کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے مساجد اور کھلی جگہوں میں عید کے بڑے اجتماعات پر پابندی عاید کردی تھی۔

تاہم اس کے باوجود انڈونیشیا کے بہت سے شہروں اور علاقوں میں مسلمانوں نے اجتماعی نماز عید ادا کی ہے لیکن انھوں نے اس عبادت کے دوران میں فاصلہ اختیار کررکھا تھا اور چہروں پر ماسک پہن رکھے تھے۔