.

امریکی صدر کی بھارت اورچین کے درمیان سرحدی تنازع پر مصالحت کی پیش کش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے بھارت اور چین کے درمیان کوہِ ہمالیہ پر سرحدی علاقے میں پیدا ہونے والے حالیہ تنازع پر مصالحت کی پیش کش کی ہے۔

صدر ٹرمپ نے بدھ کو ٹویٹر پر ایک پوسٹ میں لکھا ہے:’’ ہم نے بھارت اور چین کو مطلع کیا ہے کہ امریکا ان کے درمیان سرحد پر بڑھتے ہوئے تنازع پر مصالحت یا ثالثی کرانے کے لیے تیار ہے۔‘‘

بھارتی مبصرین کے مطابق بھارت سرحدی علاقے میں سڑکیں اور فضائی پٹی تعمیر کررہا ہے۔ وہ چین کے بیلٹ اور روڈ اقدام کے ردعمل میں یہ تعمیرات کررہا ہے اور اس وجہ سے دونوں ملکوں کے درمیان کشیدگی پیدا ہوگئی ہے۔

بھارتی میڈیا نے منگل کو یہ اطلاع دی تھی کہ چین بھارت کے ساتھ واقع بلند ترین سرحدی علاقے میں اپنے ایک ائیربیس کو توسیع دے رہا ہے۔لداخ کے نزدیک واقع اس علاقے میں چینی اور بھارتی افواج کے درمیان حالیہ دنوں میں جھڑپیں ہوئی ہیں۔

بھارت کے این ڈی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق ’’ خلائی سیارے سے لی گئی تصاویر سے بلندی پر واقع چین کے فضائی اڈے پر بڑے پیمانے پر تعمیراتی سرگرمی ظاہر ہورہی ہے۔یہ ہوائی اڈا پنگانگ جھیل سے دوسو کلومیٹر دور واقع ہے۔اسی جھیل پر چین اور بھارت کی مسلح افواج کے درمیان پانچ اور چھے مئی کو جھڑپیں ہوئی تھیں۔‘‘

بھارتی میڈیا کے مطابق تبت میں واقع چین کے نگاری گنسا ہوائی اڈے پر تعمیراتی سرگرمیاں جاری ہیں۔نگاری گنسا سطح سمندر سے 14022 فٹ بلندی پر واقع ہے اور چین اس کا ہوائی اڈا فوجی اور سول دونوں مقاصد کے لیے استعمال کرتا ہے۔

دریں اثناء چینی صدر شی جین پنگ نے کہا ہے کہ چین اپنی مسلح افواج کی جنگی تیاریوں کا عمل تیز کرے گا کیونکہ ان کے بہ قول کرونا وائرس کی وبا پھیلنے کے بعد قومی سلامتی پر نمایاں اثرات مرتب ہوئے ہیں ،اس لیے حربی امور انجام دینے کے لیے فوج کی لڑاکا صلاحیت بہتر بنانے کی ضرورت ہے۔