.

سعودی عرب : بینکنگ سیکٹر کی سیالیت مضبوط بنانے کے لیے 50 ارب ریال

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے مالیاتی ادارے Saudi Arabian Monetary Authority (SAMA) نے اعلان کیا ہے کہ اس نے مملکت کے بینکوں کی سیالیت کی قدرت کو بڑھانے کے لیے 50 ارب ریال (13.32 ارب ڈالر) کی رقم بینکنگ سیکٹر میں منتقل کی ہے۔

ساما کے مطابق یہ 50 ارب ریال نجی سیکٹر کو نقدی کی سہولتیں پیش کرنے کے سلسلے میں بینکوں کے لیے مدد گار ثابت ہوں گے جب کہ اس وقت معیشت کو تیل کی قیمتوں میں کمی اور کرونا کی وبا کی روک تھام کے لیے اقدامات کے سبب مشکل کا سامنا ہے۔

ساما کا کہنا ہے کہ بینکنگ سیکٹر میں ابھی تک اچھی کارکردگی ریکارڈ کی جا رہی ہے اور اس سے سیکٹر کی چیلنجوں اور بحرانات کا مقابلہ کرنے کی قدرت مضبوط ہو گی۔

مالیاتی مشاورت کے خلیجی مرکز کے سربراہ محمد العمران کا کہنا ہے کہ "ساما" کی اولین ترجیح بینکوں کی سیالیت کی صلاحیت کو سپورٹ کرنا ہے۔

العربیہ کے ساتھ گفتگو میں انہوں نے بتایا کہ رواں سال مارچ کے مہینے میں دنیا بھر کے بینکنگ سیکٹر کو جو اہم ترین چیلنج درپیش ہوا وہ سیالیت کا بحران تھا۔

سعودی عرب کی مالیاتی اتھارٹی (ساما) کی جانب سے جاری معلومات کے مطابق اپریل میں ادارے کے اثاثوں (غیر ملکی زر مبادلہ) کی خالص مالیت کم ہو کر تقریبا 16.65 کھرب ریال (444 ارب ڈالر) کے مساوی ہو گئی۔ اس طرح مارچ کے مہینے کے مقابلے میں اپریل میں غیر ملکی اثاثوں کی خالص مالیت میں 78.4 ارب ریال کی کمی آئی۔