.

یو اے ای: کرونا وائرس کے 35 ہزار ٹیسٹ ، 596 نئے کیسوں کی تصدیق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

متحدہ عرب امارات میں گذشتہ 24 گھنٹے میں کرونا وائرس کے 35 ہزار ٹیسٹ کیے گئے ہیں اور ان میں 596 افراد میں کووِڈ-19 میں مبتلا ہونے کی تصدیق ہوئی ہے۔

یو اے ای کی وزارت صحت کے مطابق اب ملک میں کووِڈ-19 کا شکار افراد کی تعداد 35788 ہوگئی ہے اور گذشتہ 24 گھنٹے میں اس مہلک وائرس میں مبتلا تین افراد دم توڑ گئے ہیں۔ وہ مختلف پیچیدگیوں کا شکار ہوگئے تھے۔یو اے ای میں اب تک اس مہلک وائرس سے 269 ہلاکتیں ہوچکی ہیں۔

وزارت کا کہنا ہے کہ کرونا وائرس کے مریضوں کی تعداد میں مسلسل اضافے کے باوجود تن درست ہونے والوں کی شرح میں بھی مسلسل اضافہ ہورہا ہے۔اس نے گذشتہ 24 گھنٹے میں مزید 388 افراد کے صحت یاب ہونے کی اطلاع دی ہے اور اب کل شفایاب ہونے والے مریضوں کی تعداد 18726 ہوگئی ہے۔

یو اے ای نے حال ہی میں کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے عاید کردہ پابندیوں میں نرمی کرنا شروع کردی ہے جبکہ وزارت صحت لوگوں کو مسلسل یہ بھی تلقین کررہی ہے کہ وہ اس مہلک وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے رہ نما احتیاطی تدابیر پر عمل درآمد جاری رکھیں، سماجی فاصلہ اختیار کریں اور گھروں سے باہر نکلتے وقت چہرے پر ماسک پہنیں۔

اماراتی حکومت کی ترجمان ڈاکٹر آمنہ الشمسی نے نیوز بریفنگ میں کہا کہ '' ہمیں اب بھی کووِڈ-19 کو پھیلنے سے روکنے کے لیے پیشگی حفاظتی احتیاطی تدابیر پر عمل درآمد کی ضرورت ہے۔ہم شہریوں اور مکینوں سمیت ہر کسی پر یہ زور دیں گے کہ وہ صحت مندانہ عادات کو اپنائے رکھیں۔''

وزارت صحت یو اے ای میں کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے بڑے پیمانے پر ٹیسٹ کررہی ہے تا کہ اس کے مریضوں کی بروقت تشخیص کے بعد ان کا علاج کیا جاسکے اور انھیں دوسرے افراد سے الگ تھلگ کیا جاسکے۔وزارت نے گذشتہ دو ہفتے کے دوران میں کرونا وائرس کے ساڑھے چھے لاکھ سے زیادہ ٹیسٹ کیے ہیں۔

یو اے ای کے دارالحکومت ابو ظبی اور اس سے ملحقہ شہروں میں کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے آج 2 جون سے ایک ہفتے تک شہریوں اور مکینوں کی نقل وحرکت پابندی عاید کردی گئی ہے اور ان کے امارات میں دخول اور وہاں سے خروج پر پابندی عاید ہے۔اس دوران میں شہریوں اور مکینوں کے بڑے پیمانے پر ٹیسٹ کیے جائیں گے۔

تاہم اہم شعبوں میں کام کرنے والے ملازمین ،اسپتال جانے کے خواہاں دائمی عوارض کا شکار مریض اور ضروری اشیاء کی حمل ونقل کا کام کرنے والے افراد اس پابندی سے مستثنیٰ ہوں گے۔

ابو ظبی میں کھانے پینے کی اشیاء فروخت کرنے والی دکانوں ، سپر مارکیٹوں اور دوا خانوں کو چوبیس گھنٹے کھلا رکھنے کی اجازت ہے۔اسی ماہ کے اوائل میں دبئی نے پانچ یا اس سے کم افراد کو ہوٹل بیچز پر جانے اور کھیلوں کی سرگرمیاں دوبارہ شروع کرنے کی اجازت دے دی تھی۔ریستورانوں اور دکانوں کو سماجی فاصلہ برقرار رکھتے ہوئے کھول دیا گیا تھا لیکن انھیں اپنی گنجائش کے صرف تیس فی صد گاہکوں کو خدمات مہیا کرنے کی اجازت دی گئی تھی۔

یو اے ای نے 30 مئی سے رات کے کرفیو میں رد وبدل کا اعلان کیا تھا اور کہا تھا کہ رات دس بجے سے صبح چھے بجے تک شہریوں اور مکینوں کو آزادانہ نقل وحرکت کی اجازت نہیں ہو گی۔اس دوران میں کرونا وائرس سے بچاؤ کے لیے قومی تطہیر پروگرام پر عمل درآمد کیا جارہا ہے۔ قبل ازیں قومی تطہیر پروگرام کے تحت امارت میں 24 گھنٹے کا کرفیو نافذ تھا۔