نیوزی لینڈ کرونا سے نمٹنے میں کامیاب ، تقریبات اور دیگر سرگرمیوں کی جانب واپسی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

دنیا بھر کو اپنی لپیٹ میں لینے والے کرونا وائرس کے سائے میں ایک ماہ گزارنے کے بعد نیوزی لینڈ نے اعلان کیا ہے کہ وہ اس وبا کے خلاف مقابلے میں فتح یاب ہو گیا ہے۔ دنیا بھر میں کرونا وائرس سے اب تک 70 لاکھ سے زیادہ افراد متاثر ہو چکے ہیں۔

نیوزی لینڈ کی خاتون وزیر اعظم جیسنڈا آرڈرن نے اعلان کیا ہے کہ کرونا وائرس پر قابو پا لینے کے بعد اس وبا سے متعلق تمام تدابیر اور اقدامات کو کل منگل کے روز سے ختم کیا جا رہا ہے۔ تاہم سرحدوں کی بندش اس فیصلے سے مستثنی ہو گی۔

پیر کے روز ایک پریس کانفرنس میں آرڈرن نے مزید کہا کہ آج نصف شب سے ملک میں الرٹ لیول پہلے درجے پر کر دیا جائے گا۔ ریٹیل بزنس اور ہوٹلز سیکٹرز معمول کے مطابق کام کر سکیں گے اور اسی طرح آمد و رفت اور نقل و حمل کے تمام وسائل کا دوبارہ آغاز کیا جا سکتا ہے۔

اس سے قبل نیوزی لینڈ کی وزارت صحت نے آج ایک بیان میں اعلان کیا تھا کہ 28 فروری کے بعد پہلی مرتبہ ایسا ہوا ہے کہ ملک میں کوویڈ-19 وائرس کا کوئی کیس ریکارڈ نہیں کیا گیا۔

یاد رہے کہ دنیا بھر میں متعدد ممالک نے گوشہ نشینی سے متعلق پابندیوں اور قیود کو نرم کرنا شروع کر دیا ہے۔ یہ پابندیاں کرونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے واسطے عائد کی گئی تھیں۔

دسمبر 2019 میں چین میں کرونا وائرس کے نمودار ہونے کے بعد سے اب تک یہ وبائی مرض 400581 افراد کی موت کا سبب بن چکا ہے۔ یہ اعداد و شمار اتوار کی شام گرینچ کے وقت کے مطابق سات بجے جاری کیے گئے۔

دنیا کے 196 ممالک اور علاقوں میں اب تک کرونا وائرس کے 6949890 مصدقہ کیس سامنے آ چکے ہیں۔ ان میں کم از کم 3030800 مریض صحت یاب ہو چکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں