.

سعودی عرب : ڈیکسامیتھاسون کووِڈ-19 کے علاج کے پروٹوکول میں شامل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی وزارتِ صحت نے کووِڈ-19 کے مریضوں کے علاج کے پروٹوکول میں اسٹرائیڈ ڈیکسامتیھاسون کو شامل کرنے کی منظوری دے دی ہے۔

سعودی پریس ایجنسی کے مطابق یہ دوا اسپتالوں میں زیر علاج ان مریضوں کو دی جائے گی جنھیں آکسیجن کی ضرورت ہے اور وہ انتہائی نگہداشت کے یونٹ میں ہیں۔

ڈیکسا میتھاسون 1960ء کے عشرے سے جوڑوں کے درد اور سوجن کا شکار مریضوں کو دی جارہی ہے۔برطانوی محققین کے حال ہی میں شائع شدہ ایک مطالعے کے مطابق اس کے استعمال سے کووِڈ-19 کے ان مریضوں کی موت کے امکانات میں کمی واقع ہوئی ہے جو 35 فی صد تک وینٹی لیٹرز پر تھے۔ کووِڈ-19 کے ایسے مریض جو آکسیجن پر تھے لیکن وینٹی لیٹرز پر نہیں تھے،ان میں قریباً 20 فی صد تک شرح اموات میں کمی واقع ہوئی ہے۔

عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) نے بدھ کو کہا ہے کہ وہ کووِڈ-19 کے علاج کے لیے اپنی رہ نما ہدایات پر نظرثانی کررہا ہے اور وہ آکسفورڈ یونیورسٹی کے محققین کی ابتدائی جانچ کے نتائج کو شامل کررہا ہے۔

دریں اثناء برطانیہ نے اپنے ادویہ کے ذخائر میں ڈیکسامیتھاسون کے نسخوں کی تعداد میں اضافے کا اعلان کیا ہے۔برطانوی وزیر صحت میٹ ہینکوک نے پارلیمان کو بتایا:’’دنیا میں یہ پہلا موقع ہے اور کلنیکی لحاظ سے یہ بات ثابت ہوئی ہے کہ ایک دوا سے کووِڈ-19 کے شدید علیل مریضوں کی زندگیوں کے امکانات میں اضافہ ہوا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں