ایرانی حمایت یافتہ حوثی باغی امن سے بھاگ رہے ہیں: امریکا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمن میں امریکی سفیر نے سعودی عرب پر حوثی باغیوں کے حملوں اور تشدد کے واقعات کی شدید مذمت کی ہے۔ امریکی سفیر کا کہنا ہے کہ حوثی باغی امن مساعی سے بھاگ رہے ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق امریکی سفیر نے کہا کہ حوثی باغیوں کا امن مساعی کا مثبت جواب نہ دینا امن کوششوں سے بھاگنے اور یمن میں خانہ جنگی جاری رکھنے پر اصرار کےمترادف ہے۔

دوسری طرف یمن کی آئینی حکموت کے وزیراعظم معین عبدالملک نے کہا ہے کہ حوثی باغیوں کی طرف سے سعودی عرب کے شہری علاقوں پر حملے اور یمن میں متعدد محاذوں پر عسکری جارحیت میں اضافہ اس بات کا واضح اشارہ ہے کہ حوثی اقوام متحدہ کی کوششوں سے ملک میں جنگ بندی کی مساعی سے فرار اختیار کررہے ہیں۔

یمن میں امریکا کے سفیر کریسٹوفر ھنرل نے کہا کہ حوثی باغیوں کا جنگ بندی کی کوششوں پرمثبت جواب نہ دینا اور سعودی عرب پر ڈرون طیاروں اور بیلسٹک میزائلوں سے حملہ کرنا امن مساعی سے فرار اختیار کرنےکے مترادف ہے۔

یمنی وزیراعظم معین عبدالملک نے کہا کہ یمنی حکومت عدن کی انقلابی کونسل کے ساتھ سعودی عرب کی میزبانی میں طے پائے جنگ بندی معاہدے پر عمل درآمد یقینی بنائے گی۔

خیال رہے کہ کل منگل کے روز حوثی باغیوں نے سعودی عرب کے دارالحکومت الریاض پر بیلسٹک میزائل حملہ کیا تاہم عرب اتحادی فوج اور سعودی محکمہ دفاع نے بروقت کارروائی کرکے حوثیوں کے میزائل کو ہدف تک پہنچنے سے پہلے ہی مار گرایا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں