.

تُرک کمپنی لیبیا میں وفاق حکومت کی فورسز کو تربیت دینے میں مصروف ہے : رپورٹ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایک فرانسیسی ویب سائٹ کی جانب سے جاری رپورٹ میں ترکی کی ایک پیرا ملٹری کمپنی SADAT کے بارے میں انکشاف کیا گیا ہے۔ اس کمپنی نے لیبیا میں ایک سیکورٹی کمپنی کے ساتھ معاہدے پر دستخط بھی کیے ہیں جس کا سربراہ ملک میں الاخوان کا ایک رہ نما فوزی ابو کتف ہے۔ رپورٹ جاری کرنے والی فرانسیسی ویب سائٹ Africa Intelligence کو مغربی دنیا میں کئی انٹیلی جنس محکموں سے قریب شمار کیا جاتا ہے۔

فرانسیسی ویب سائٹ کی جانب سے جاری رپورٹ کو " تُرک پیرا ملٹری کمپنی سادات نے ایردوآن - السراج اتحاد کو اپنے لیے کام کے موقع میں بدل ڈالا" کا عنوان دیا گیا ہے۔ رپورٹ کے مطابق سادات کمپنی نے وفاق حکومت کے شانہ بشانہ لڑنے والی فورسز کو تربیت دینے کے لیے لیبیا کی سیکورٹی کمپنی کے ساتھ سمجھوتے پر دستخط کیے۔

رپورٹ میں باور کرایا گیا ہے کہ لیبیا میں ترکی کی وسیع مداخلت کے بعد مذکورہ ترک سیکورٹی کمپنی کئی ماہ سے عسکری تربیت کے معاہدوں کے حصول کے لیے کوشش کر رہی تھی۔

فرانسیسی ویب سائٹ پر جاری رپورٹ کے مطابق "سادات" کمپنی ترکی کی انٹیلی جنس کے زیر نگرانی کام کر رہی ہے۔

اسی طرح رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ "سادات" کمپنی کی مہارت کو اُن شامی جنگجوؤں کو تربیت دینے کے واسطے بھی استعمال کیا جا سکتا ہے جن کو ترکی نے لیبیا میں طرابلس کے محاذ پر بھیجا ہے۔ اس کمک کو فائز السراج اور رجب طیب ایردوآن کے درمیان دسمبر 2019 میں دستخط کیے گئے دفاعی سمجھوتے کے تحت بھیجا گیا ہے۔ اس کا مقصد لیبیا کی فوج کی پیش قدمی کو روکنا ہے۔