.

لیبیا میں غیر ملکی مداخلت نے تنازع کے سیاسی حل کو پیچیدہ بنا دیا: برطانیہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لیبیا میں برطانوی سفارت خانے کی جانب سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ ملک میں غیر ملکی مداخلت کے نتیجے میں ملک میں جاری سیاسی تنازع کے حل میں رکاوٹیں پیدا ہوئی ہیں اور متحارب فریقوں کے درمیان جنگ بندی کی کوششوں کو نقصان پہنچا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق لیبیا میں قائم برطانوی سفارت خانے کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ برطانیہ میں تیل کی پیداوار میں جبری کمی، تیل کی بندرگاہوں کی مسلسل بندش اور غیر ملکی مداخلت کی اطلاعات باعث تشویش ہے۔

بیان میں زور دیا گیا ہے کہ تیل کی پیداوار میں جبری کمی نے گذشتہ جنوری سے چھ ارب ڈالر سے زیادہ کا نقصان پہنچا ہے۔ اس کے نتیجے میں لیبیا کے عوام پر منفی معاشی نتائج مرتب ہوئے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا اس بندش نے لیبیا میں تیل کی تنصیبات کے بنیادی ڈھانچے کو بھی نقصان پہنچایا۔

برطانیہ نے لیبیا میں قومی وفاق حکومت کے دفاع کے لیے غیر ملکی اجرتی جنگجوئوں کی بھرتی کی خبروں پر بھی تشویش کا اظہار کیا اور کہا کہ لیبیا کے توانائی کے شعبے میں عسکریت پسندی ناقابل قبول ہے اور اس سے مزید نقصان کا خطرہ ہے۔