.

پوپ فرانسیس:کرونا کی وَبا سے نمٹنےکے لیے اقوام متحدہ کی عالمی جنگ بندی کی اپیل کا خیرمقدم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

رومن کیتھولک کے روحانی پیشوا پوپ فرانسیس نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی دنیا بھر میں تنازعات کو روکنے کے لیے جنگ بندی سے متعلق قرارداد کی حمایت کا اظہار کیا ہے تاکہ کرونا وائرس کے خلاف جنگ پر توجہ مرکوز کی جاسکے۔

اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل نے گذشتہ بدھ کو اتفاق رائے سے ایک قرارداد منظور کی تھی۔اس میں سلامتی کونسل کے ایجنڈے میں شامل تمام تنازعات کو فوری طور پر روکنے کے لیے جنگ بندی کی اپیل کی گئی ہے۔

پوپ فرانسیس نے ویٹی کن سٹی میں اتوار کو سینٹ پیٹرز اسکوائر میں اپنے ہفتہ وار خطاب کے بعد کہا کہ ’’عالمی سطح پرجنگ بندی کی فوری اپیل قابل تعریف ہے۔اس سےناگزیرانسانی امداد بہم پہنچانے کے لیے امن وسلامتی کا قیام ممکن ہوسکے گی۔‘‘

انھوں نے کہا:’’میں امید کرتا ہوں کہ اس فیصلے کا مصائب کا شکار بہت سے لوگوں کی بھلائی کے لیے مؤثر انداز میں اور فوری نفاذ کیا جائے گا۔سلامتی کونسل کی یہ قرارداد پُرامن مستقبل کی جانب ایک حوصلہ افزا پہلا قدم ثابت ہوگی‘‘۔

واضح رہے کہ سلامتی کونسل کی کرونا وائرس کی وَبا پھیلنے کے بعد یہ پہلی متقفہ قرارداد ہے جس میں تنازعات کے خاتمے یا انھیں عارضی طور پر روکنے پر زور دیا گیا ہے۔

اس قرارداد پر گذشتہ تین ماہ تک بحث ہوتی رہی ہے اور چین اور امریکا نے رائے شماری کے وقت اس کو متعدد مرتبہ بلاک کیا ہے۔دونوں ممالک قرار داد میں عالمی ادارہ صحت ( ڈبلیو ایچ او) کے حوالے پر معترض تھے۔اس قرارداد کا مقصد اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل انتونیو گوتیریس کی مارچ میں عالمی سطح پر جنگ بندی کی اپیل کا توثیق تھا۔

اس میں دنیا میں مسلح تنازعات کے تمام فریقوں پر زوردیا گیا ہے کہ ’’وہ فوری طور پر کم سے کم نوّے دن کے لیے جنگ بندی کا پائیدار وقفہ کریں تاکہ متاثرین تک بلا تعطل اور محفوظ طریقے سے انسانی امداد بہم پہنچائی جاسکے۔‘‘