.

"ابھا" سے جزیرہ کدنمبل تک عالمی سیاحتی روٹ کے دلفریب مناظر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

بحر احمر کے کنارے سعودی عرب کے جنوب مغرب میں "کدنمبل" جزیرے کے وسط تک ابھا شہر سے متصل سڑک کے پار سیاحتی روٹ کا ایک مجوزہ منصوبہ تیار کیا گیا ہے۔ اس میں سرمایہ کاری اور سیاحت کے مواقع کے ساتھ یہ منصوبہ عالمی توجہ کا مرکز بن سکتا ہے۔

حال ہی میں سائیکل سواروں کا ایک گروپ اس روٹ پر گیا۔ انہوں نے سات روزہ دورے کے دوران 170 کلومیٹر کا فاصلہ طے کیا۔ اس گروپ میں فوٹوگرافر محمد الیوسی بھی شامل تھے۔ انہوں نے موقعے سے فایدہ اٹھاتے ہوئے ابھا شہر سے کدنمبل جزیرے تک قدرتی حسن کے مناظر کواپنے کیمرے میں محفوظ کیا۔ ان کا سفر رجال المع سے الحریضہ تک خشکی کے راستے پر جاری رہا۔ وہاں سے کشتی کے ذریعے جزیرہ کدنمبل پہنچے۔

فوٹو گرافر الیوسی نے زور دے کر کہا کہ اس گروپ نے سفر کے دوران مشکلات ، پہاڑوں پر چڑھنے اور کچی سڑکوں کے باوجود مجوزہ سیاحتی راستے پراپنا سفر مکمل کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ راستے میں آنے والے تمام مقامات اپنے قدرتی حسن میں قدرت کا حسین شاہ کار ہیں۔ یہ جگہ عالمی سیاحوں کی رسائی نہ ہونے کی وجہ سے عالمی توجہ حاصل نہیں کرسکی۔

عسیر خطے میں ترقیاتی اہداف کے حصول کے ساتھ ساتھ اس سیاحتی روٹ پر بھی توجہ دینے کی ضرورت ہے تاکہ عالمی سیاح اس علاقے میں آسکیں۔ یہ ایک سنگ میل ہے جو دنیا کے کسی اور خطے کی طرح نہیں ہے۔ روشنی، بارش، سمندر اور صحرا کے مابین ان علاقوں میں ایک طرف سرسبز وشادات اور لہلاتے حد نگاہ پھیلے کھیت ہیں اور دوسری طرف قدرتی اور تاریخی مقامات ہیں۔

یہ علاوہ اپنے خوش گوار موسم اور فطری تنوع کے اعتبار سے دلکش اور سیاحت کے لیے نہایت موزوں ہے۔ یہاں درجہ حرارت 20 ڈگری سینٹی گریڈ کے قریب قریب رہتا ہے۔ جبکہ اس میں السودہ کے کادرجہ حرارت 15 ڈگری سینٹی گریڈ ہے۔ جب آپ یہاں سے ایک لمبا سفر کر کے الحریضہ پہنچتے ہیں تو وہاں درجہ حرارت 45 درجے سینٹی گریڈ تک پہنچ جاتا ہے۔