.

کرونا وائرس: دوسری لہر زیادہ شدید، دنیا کے کئی ممالک میں دوبارہ لاک ڈاؤن

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

دنیا بھر میں کرونا وائرس کے وبائی مرض کے پھیلنے کا سلسلہ جاری ہے۔ کئی ممالک دوبارہ سے لاک ڈاؤن کی طرف لوٹنے پر مجبور ہو رہے ہیں جب کہ اس وائرس کے پھیلاؤ کے حوالے سے بدستور بری خبریں آ رہی ہیں۔

بھارت بنگلور اور بیہار میں تقریبا 14 کروڑ افراد پر دوبارہ لاک ڈاؤن اور گوشہ نشینی نافذ کرنے کی تیاری کر رہا ہے۔ بھارت کی کُل آبادی 1.3 ارب نفوس پر مشتمل ہے۔

ادھر آسٹریلیا میں وزیر اعظم کا کہنا ہے کہ اگر کوویڈ 19 کے پھیلاؤ پر جلد قابو نہ پایا جا سکا تو ملک میں زیادہ گنجان آباد ریاستوں میں نقل و حرکت پر سخت قیود لگائی جائیں گی۔

آسٹریلیا کا شمار عالمی سطح پر کوویڈ 19 پر روک لگانے والے صف اول کے ممالک میں ہو رہا تھا تاہم گذشتہ ہفتے وہاں کرونا وائرس کے نئے کیسوں میں اضافہ دیکھا گیا۔

ملکی سطح پر آسٹریلیا میں اب تک کرونا وائرس کے تقریبا 10500 مصدقہ کیس سامنے آ چکے ہیں۔ ان میں 111 متاثرین فوت ہو چکے ہیں۔

دوسری جانب برازیل میں گذشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران مزید 1300 اموات کا اندراج ہوا ہے۔ اس طرح ملک میں کرونا کے سبب مرنے والوں کی مجموعی تعداد 74 ہزار سے زیادہ ہو چکی ہے۔ برازیل میں کرونا وائرس کے مصدقہ کیسوں کی مجموعی تعداد 20 لاکھ کے قریب ہے۔

دنیا میں کرونا وائرس سے سب سے زیادہ متاثرہ ملک امریکا میں اب تک 34.2 لاکھ متاثرین کا انکشاف ہوا ہے۔ ان میں سے 136432 مریض موت کا شکار ہو چکے ہیں۔

دنیا بھر میں اب تک کرونا وائرس کے 1.3 کروڑ مصدقہ کیس سامنے آ چکے ہیں۔ ان میں سے 5.7لاکھ مریض اس دنیا سے رخصت ہو چکے ہیں۔