.

سعودی عرب: حکام کاغیرقانونی مالیاتی کاروبار کرنے والے اداروں سے متعلق عوام کوانتباہ!

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب نے عوام کو خبردار کیا ہے کہ وہ غیر ملکی زرمبادلہ کی غیرمجاز تجارت کرنے والی مارکیٹ میں کوئی کاروبار نہ کریں۔

سعودی عرب کے مرکزی بنک (مانیٹری اتھارٹی) کی قائمہ کمیٹی برائے شعور وانتباہ نے جمعرات کو ایک بیان میں خبردار کیا ہے کہ’’غیر قانونی کاروبار کرنے والی غیرمجاز کمپنیوں اور افراد نے اب نئے طریق کار اختیار کر لیے ہیں۔ان میں بعض طریق کار میں سرکاری ایجنسیوں اور پرائیویٹ پارٹیوں کے سلوگن استعمال کیے جارہے ہیں اور اشتہارات میں حکومت یا سرکاری شخصیات سے منسوب غلط بیانات شائع کیے جارہے ہیں۔‘‘

ان طریق ہائے کار کا مقصد عوام کو گم راہ کرنا ہے اور کسی قانونی مالیاتی ادارے کے بارے میں الجھاؤ پیدا کرنا ہے۔

کمیٹی نے بیان میں واضح کیا ہے کہ مشتبہ ادارے حکومت کے آن لائن اشتہارات کو رابطے سے متعلق معلومات اور سرمایہ کاری کے مواقع کی تشہیر کے لیے استعمال کررہے ہیں تاکہ غیر ارادی طور پر لنکس پر کلک کرنے والے افراد سے مالی فوائد حاصل کرسکیں۔

سعودی عرب میں ایسے فراڈیے اور دھوکے باز اپنی خدمات کے فروغ کے لیے سوشل میڈیا کو بھی استعمال کررہے ہیں۔وہ ان پر اشتہارات دے رہے ہیں یا رقوم دے کر اپنی تشہیر کررہے ہیں۔انھیں یہ توقع ہے کہ اس طرح وہ عوام کو جھانسا دینے میں کامیاب ہوجائیں گے۔

کمیٹی نے عوام پر زوردیا ہے کہ وہ جس بھی مالیاتی ادارے سے رابطے میں آئیں، اس کی قانونی حیثیت کی جانچ کر لیں اور یہ دیکھ لیں کہ آیا اس کے پاس سرمایہ کاری کی خدمات مہیا کرنے کے لیے کوئی لائسنس موجود ہے۔