.

نائیجیریا میں ہتھیار پھینکنے پر دو گائے دینے کی منفرد حکومتی پیش کش

ملک میں جاری خونی کارروائیاں روکنے اور جرائم پیشہ مافیا کو نکیل ڈالنے کی منفرد کوشش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شمال مغربی نائیجیریا میں جمفرہ ریاست کے حکام نے جمعرات کے روز اس علاقے میں خونی مجرم گروہوں کے حملوں کو روکنے کی کوشش میں ہتھیار پھینکنے والے افراد کو فی کس دو گائے دینے کا وعدہ کیا ہے۔

زامفارہ کے گورنر بیلو ماتوالی نے کہا کہ ایک بندوق حکومت کے پاس جمع کرانے والے کسی بھی اجرتی جنگجو کو دو زندہ گائے کی شکل میں معاوضہ دیا جائے گا۔

خیال رہے کہ زامفارہ کا علاقہ اغواکاروں، مسلح شدت پسندوں، راہ زنوں اور مویشی چوروں ک نشانہ بنا ہوا ہے۔ ماتا والی کے مطابق اس پیش کش کا مقصد "ڈاکوؤں" کے نام سے مشہور گینگسٹروں کو اپنے ہتھیار ڈالنے پر راضی کرنا ہے۔ ابھی تک ، حکام نے ان ہلاکتوں کے خاتمے کے لیے فوجی کارروائیوں کے ساتھ امن مذاکرات بھی کیے ہیں لیکن اس کا کوئی فائدہ نہیں ہوا۔

فی الحال ، اس بات کا کوئی اشارہ نہیں ہے کہ یہ حکمت عملی ڈاکو ، جو زیادہ تر فولانی گلہ بان ہیں ، مویشیوں کو چلانے اور اغوا برائے تاوان کے لیےسرگرم ہیں حکومتی پیش کش کا جواب دیتے ہیں یا نہیں۔ شمال مغربی نائیجیریا میں لوٹ مار اور اغوا برائے تاوان کے بڑھتے جرائم کے بعد 2011 کے بعد اب تک 8000 ہزار افراد ہلاک اور دو لاکھ بے گھر ہو چکے ہیں۔