.

افغان لڑکی نے دو طالبان جنگجوقتل کرکے والدین کا انتقام لے لیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

افغانستان کے غزنی صوبے سے تعلق رکھنے والی ایک لڑکی نے طالبان کے ہاتھوں اپنے والدین کی ہلاکت کا بدلہ لیتے ہوئے دو طالبان جنگجوئوں کو موت کے گھاٹ اتار دیا۔

مقامی عہدیداروں نے بتایا کہ قمر گل نامی لڑکی کے والدین کو طالبان انتہا پسندوں نے ان کے گھر کے باہر حکومت کے ساتھ وفاداری کے الزام میں گولیاں مار کر قتل کردیا تھا۔

یہ واقعہ گذشتہ ہفتے اس وقت پیش آیا جب شدت پسندوں نے اس لڑکی کے گھر پر دھاوا بولا۔ قمر گل کا والد صوبہ غور میں گاؤں کا اہلکار تھا۔

مقامی پولیس چیف حبیب الرحمن ملک زادہ نے اے ایف پی کو بتایا کہ طالبان جنگجو اس کے والد کی تلاش کر رہے تھے کیونکہ وہ حکومت کی حمایت کر رہا تھا۔

پولیس چیف کے مطابق انہوں نےقمر گل کے والد کو گھر سے نکالا اور اسے مارنے لگے، اس پر اس کی اہلیہ نے مزاحمت کی مگر طالبان نے ان دونوں کو بے دردی کے موت کے گھاٹ اتار دیا تھا۔

انہوں نے مزید کہا کہ قمر گل گھر کے اندر تھی۔ اس نے اپنے والد کی مشین گن اٹھائی اور طالبان شدت پسندوں‌پر گولی چلا دی جس کے نتیجے میں کم سے کم دو طالبان ہلاک اور دو زخمی ہوگئے۔

حکام کا کہنا ہے کہ بچی کی عمر 14 سے 16 سال کے درمیان ہے۔

بعد میں طالبان عناصر گھر پر حملہ کرنے آئے لیکن دیہاتیوں اور حکومت کے حامی عناصر کی فائرنگ کے بعد وہاں سے واپس چلے گئے۔