.

کرونا وائرس : قطر میں پھنسے 73 اماراتی شہریوں اور مکینوں کی کویت کے راستے وطن واپسی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

قطر میں کرونا وائرس کی وَبا پھیلنے کے بعد متحدہ عرب امارات کے پھنسے ہوئے 73 شہری اور مکین کویت کے راستے جمعرات کو وطن واپس پہنچ گئے ہیں۔

کرونا وائرس کی وَبا پھیلنے کے بعد بین الاقوامی پروازیں اور زمینی سرحدیں بند ہونے سے دنیا کے مختلف ملکوں میں ہزاروں افراد پھنس کررہ گئے ہیں۔ اب بین الاقوامی پروازوں کی بتدریج بحالی کے بعد وہ اپنے آبائی ممالک کو لوٹ رہے ہیں۔

متحدہ عرب امارات کی وزارت خارجہ اور بین الاقوامی تعاون نے ایک بیان میں کہا ہے کہ 73 اماراتی شہریوں اور ان کے ساتھیوں کو کویت کے راستے طیارے کے ذریعے واپس لے آیا گیا ہے۔ ان میں 41 اماراتی شہری ہیں اور باقی 32 ان کے غیرملکی ساتھی ہیں۔

اس نے بیان میں مزید کہا ہے کہ یو اے ای میں کویت ائیر ویز کی خصوصی پرواز کے ذریعے پہنچنے والوں میں انسانی بنیاد پر کیس ، ضعیف العمر شہری ، حاملہ خواتین اور مختلف دائمی امراض میں مبتلا افراد شامل ہیں۔

وزارت خارجہ کے انڈر سیکریٹری خالد عبداللہ حمید بالہول نے ان اماراتی شہریوں کی وطن واپسی کے عمل میں تعاون پر کویت کا شکریہ ادا کیا ہے۔

واضح رہے کہ یو اے ای نے جولائی کے وسط میں قطر کی پروازوں کے لیے اپنی فضائی حدود بند رکھنے کا اعلان کیا تھا اور کہا تھا کہ وہ اپنے اس فیصلے کے حق میں شہری ہوابازی کی بین الاقوامی تنظیم کو قانونی درخواست پیش کرے گا۔

یو اے ای ، سعودی عرب ،بحرین اور مصر نے قطر کے ساتھ جون 2017ء میں ہر طرح کے سفارتی ، تجارتی اور مواصلاتی روابط منقطع کرلیے تھے اور اس پر دہشت گردی کی معاونت کا الزام عاید کیا تھا لیکن قطر نے اس الزام کی تردید کی تھی۔ یہ چاروں ممالک قطر سے تعلقات کی بحالی کے لیے دہشت گردی کی مالی معاونت اور حمایت سے دستبردار ہونے کا مطالبہ کرچکے ہیں لیکن اس خلیجی ریاست نے ہنوز انھیں اس ضمن میں کوئی یقین دہانی نہیں کرائی ہے۔