.

امریکا کی لیبیا میں عدم استحکام میں کردار پرتین افراد اور ایک کمپنی پر پابندیاں عاید

ہم لیبیا میں امن اور خوش حالی دیکھنا چاہتے ہیں، وہاں اقوام متحدہ کی ثالثی میں پائیدار جنگ بندی ہونی چاہیے: مائیک پومپیو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا کے محکمہ خزانہ نے جمعرات کے روز لیبیا میں جاری خانہ جنگی اور عدم استحکام میں کردار پر تین افراد اور مالٹا سے تعلق رکھنے والی ایک کمپنی پر پابندیاں عاید کردی ہیں۔

محکمہ خزانہ نے مالٹا سے تعلق رکھنے والی کمپنی الوفاق لیمٹڈ کے علاوہ لیبیا سے تعلق رکھنے والے تین افراد اور مرایا نامی ایک جہاز کو بلیک لسٹ قرار دیا ہے۔اب امریکی شہری ان لیبی افراد اور کمپنی کے ساتھ کاروبار نہیں کرسکیں گے۔

وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے ٹویٹر پر ایک بیان میں کہا ہے کہ ’’ آج امریکا نے لیبیا میں عدم استحکام میں کردار ادا کرنے والے اسمگلروں کے ایک نیٹ ورک پر مالیاتی پابندیاں عاید کردی ہیں۔ یہ نیٹ ورک لیبی عوام کو معاشی وسائل سے محروم کررہا تھا۔‘‘

ان کا کہنا ہے کہ ’’ ہم لیبیا میں امن ، سلامتی یا استحکام کو نقصان پہنچانے والوں کے خلاف ٹھوس اقدامات جاری رکھیں گے۔‘‘

امریکی وزیر خارجہ نے مصری ہم منصب سامح شکری سے بھی ٹیلی فون پر بات چیت کی ہے اور ان سے باہمی دلچسپی کے امور اور خطے میں امن و استحکام سے متعلق مشترکہ مفادات پر تبادلہ خیال کیا ہے۔

انھوں نے کہا کہ ’’ ہم نے لیبیا میں تازہ پیش رفت کے حوالے سے گفتگو کی ہے۔ہم وہاں امن اور خوش حالی دیکھنا چاہتے ہیں۔لیبیا میں اقوام متحدہ کی ثالثی میں ایک پائیدار جنگ بندی ہونی چاہیے۔اس ویژن کے لیے کشیدگی کا خاتمہ بڑی اہمیت کا حامل ہے۔‘‘