.

استنبول: ترک صدر کی حماس کے اعلیٰ اختیاراتی وفد سے ملاقات

حماس کو امریکا کی دہشت گرد تنظیموں کی فہرست میں شمار کیا جاتا ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ترک صدر رجب طیب ایردوآن نے گزشتہ ہفتے کے دوران فلسطینی مزاحمتی تنظیم حماس کی اعلیٰ قیادت سے استنبول میں ملاقات کی۔ حماس کے وفد میں جماعت کی پولٹ بیورو کے سربراہ اسماعیل ھنیہ اور نائب سربراہ صالح العاروری شامل تھے۔یاد رہے کہ امریکا نے حماس کو دہشت گرد تنظیم قرار دے رکھا ہے اوران دونوں رہنمائوں کے سر کی قیمت 50 لاکھ ڈالر مقرر کر رکھی ہے۔

ترکی کے سرکاری ٹی وی چینل ٹی آر ٹی کے مطابق ترک صدر نے اسماعیل ھنیہ کی صدارت میں آنے والے وفد سے استنبول کے وحدالدین محل میں ملاقات کی۔اس ملاقات میں ترک خفیہ ایجنسی کے سربراہ حاکان فیدان، صدارتی ترجمان فرحت الدین التن اور صدارتی محل کے ترجمان ابراہیم کالن نے شرکت کی۔

امریکی وزارت خارجہ نے سنہ 2018ء میں حماس کی پولٹ بیورو کے سربراہ اسماعیل ھنیہ کو دہشت گرد قرار دے دیا تھا۔

گزشتہ ہفتے کے دوران ہی برطانوی روزنامے دی ٹیلی گراف کے مطابق ترکی نے حماس کے سینئر ارکان کو ترک شہریت سے نوازا ہے۔ ٹیلی گراف کے مطابق اس کے نمائندے نے ترکی میں موجود حماس کے 12 سینئر رہنمائوں میں کم از کم ایک کے پاس ترک شہریت کے کاغذات دیکھے ہیں۔