.

۔۔۔اوراب یواے ای اوراسرائیل کے وزراء دفاع کا مشرقِ اوسط میں امن واستحکام پر تبادلہ خیال

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

متحدہ عرب امارات اور اسرائیل کے وزرائے دفاع نے منگل کے روز مشرقِ اوسط میں امن واستحکام اور دونوں ملکوں کے درمیان ’’ٹھوس دوطرفہ تعلقات‘‘ کے قیام کے بارے میں تبادلہ خیال کیا ہے۔

یو اے ای کی سرکاری خبررساں ایجنسی وام کے مطابق ’’وزیر مملکت برائے دفاعی امور محمد بن احمد الباوردی نے اسرائیلی وزیر دفاع بینی گینز سے ٹیلی فون پر دونوں ملکوں کے درمیان طے شدہ تاریخی معاہدے کے بارے میں بات چیت کی ہے۔‘‘اس امن معاہدے کا 13 اگست کو اعلان کیا گیا تھا۔

’’دونوں وزراء نے اس معاہدے کے بارے میں اپنے اس یقین کا اظہار کیا ہے کہ اس سے خطے میں امن واستحکام کے امکانات میں اضافہ ہوگا کیونکہ یہ اس سمت میں ایک مثبت قدم ہے۔‘‘

دونوں وزراء نے مواصلاتی چینلوں کو مضبوط بنانے کے علاوہ ایسے ٹھوس دوطرفہ تعلقات کے قیام کے حوالے سے بھی بات چیت کی ہے جن سے یو اے ای اور اسرائیل کے علاوہ پورے خطے کو فائدہ پہنچے۔

سوموار کو دونوں ملکوں کے وزرائے صحت نے کرونا وائرس کی وَبا کے خلاف جنگ میں تعاون کو مضبوط بنانے کے بارے میں تبادلہ خیال کیا تھا۔ امارات کے وزیر صحت عبدالرحمٰن بن محمد الاویس اور اسرائیلی وزیر یولی ایڈلسٹین نے فون پر طب کے شعبے بالخصوص دوا سازی کی صنعت اور میڈیکل میں تحقیق پر تعاون کو مضبوط بنانے کے طریقوں پر بات چیت کی تھی۔

انھوں نے کووِڈ-19 کی وَبا کے خلاف جنگ میں تعاون کے فریم ورک کے علاوہ اس مہلک وائرس کی ویکسین کی آزمائش اور علاج کے بارے میں بھی گفتگو کی تھی۔عبدالرحمٰن بن محمد الاویس کا کہنا تھاکہ’’ اس وبا سے پیدا ہونے والے حالات کے پیش نظر طبی تحقیق کے شعبے میں مربوط کوششیں ہونی چاہییں۔‘‘