.

ایران کو ہتھیاروں کے حصول کی اجازت ہرگز نہیں دیں گے: اقوام متحدہ میں امریکی مندوب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اقوام متحدہ میں امریکا کی خاتون مندوب کیلی کرافٹ کا کہنا ہے کہ ان کا ملک ایران کو ہتھیاروں کے حصول کی اجازت نہیں دے گا۔

العربیہ نیوز چینل کے ساتھ خصوصی انٹرویو میں کیلی نے کہا کہ ایران ہتھیاروں کو دہشت گردی کے واسطے استعمال کرتا ہے لہذا اس کا ہتھیار حاصل کرنا بدترین امر ہے۔

کیلی نے واضح کیا کہ واشنگٹن سلامتی کونسل کی قرار داد 2231 کے مطابق آئندہ ماہ کی بیس تاریخ کو "اسنیپ بیک" کے نام سے معروف پابندیوں کا میکانزم لاگو کرنے کے لیے کام کرے گا۔ انہوں نے سلامتی کونسل پر زور دیا کہ وہ اس سلسلے میں قانونی اقدامات کے نفاذ کی ذمے داری پوری کرے۔

کیلی کرافٹ کے مطابق جو ملک بھی ایران کو ہتھیاروں کے حصول سے روکنے کے حق میں ووٹ نہیں دے گا وہ دنیا میں دہشت گردی کی اول نمبر پر ذمے دار ریاست (ایران) کی سرپرستی میں حصہ دار ہو گا۔

اس سے قبل امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے سوشل میڈیا کے ذریعے جاری بیان میں کہا تھا کہ "آئندہ ماہ بیس تاریخ کی نصف شب سے ایران پر پابندیاں لوٹ آئیں گی"۔

پومپیو نے واضح کیا کہ "اگر اقوام متحدہ کے کسی بھی رکن ملک نے ایران پر پابندیوں میں نرمی جاری رکھنے کے لیے سلامتی کونسل میں قرار داد پیش کی تو امریکا اس کی مخالفت کرے گا۔ اس کوئی قرار داد نہ پیش کی گئی تو 20 ستمبر سے ایران پر پابندیاں جاری ہو جائیں گی ... سلامتی کونسل کی قرار داد نمبر 2231 یہ ہی طریقہ کار پیش کرتی ہے"۔