.

لیبیا: معطل وزیرداخلہ فتحی باشاغا کی طرابلس آمد، صلاح الدين النمروش نئے وزیر مقرر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لیبیا کی قومی اتحاد کی حکومت کے معطل وزیر داخلہ فتحی باشاغا ترکی کے حالیہ دورے کے بعد طرابلس پہنچ گئے ہیں جبکہ ان کی جگہ وزیر اعظم فائز السراج نے صلاح الدين النمروش کو نگران وزیر داخلہ مقرر کردیا ہے۔

لیبیا کی قومی اتحاد کی حکومت ( جی این اے) نے جمعہ کو وزیر داخلہ فتحی کو معطل کرنے کا اعلان کیا تھا اور ان کے خلاف حالیہ بیانات پر تحقیقات کرنے کا اعلان کیا تھا۔ جی این اے نے بعد میں اپنے ٹویٹر پر انھیں ہٹانے کی تصدیق کی ہے۔

العربیہ کو ذرائع نے بتایا ہے کہ فتحی باشاغا نے ترکی کا حالیہ دورہ وزیراعظم فائزالسراج کے علم کے بغیر کیا ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ انھوں نے وزیراعظم فائزالسراج کو ہٹانے کی سازش کی تھی اور اس وجہ سے انھیں معطل کیا گیا ہے لیکن حکومت کی جانب سے ان کی معطلی کے فیصلے کا یہ جواز پیش کیا گیا ہے کہ سکیورٹی فورسز نے حال ہی میں طرابلس میں احتجاجی مظاہرین کے خلاف ریاستی طاقت کا باافراط استعمال کیا ہے۔اس پر انھوں نے خود ہی مخالفانہ بیانات جاری کیے تھے۔

جی این اے نے گذشتہ روز ایک بیان میں کہا تھا کہ ’’ وزیر داخلہ فتحی کو عارضی طور پر معطل کیا گیا ہے۔اب انھیں طرابلس اور دوسرے شہروں میں حالیہ مظاہروں کے بارے میں بیانات پر تحقیقات کا سامنا کرنا پڑے گا۔‘‘

گذشتہ اتوار کو طرابلس میں شہریوں نے جی این اے کی حکومت کے خلاف عوامی خدمات کے پست معیار اور بدعنوانیوں پر احتجاجی مظاہرے کیے تھے،سکیورٹی فورسز نے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے فائرنگ کی تھی۔ گذشتہ سوموار اور بدھ کو بھی سکیورٹی فورسز نے مظاہرین پر فائرنگ کی تھی۔

معطل وزیر داخلہ فتحی باشاغا نے کہا تھا کہ بدھ کو مسلح افراد نے پُرامن مظاہرین پر حملے کیے تھے اور ان پر بلا امتیاز براہ راست فائرنگ کی تھی۔