.

یو اے ای : کرونا مخالف جنگ کے 80 ہزار ہیلتھ ہیروز کا نئے امدادی پروگرام کے لیے انتخاب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

متحدہ عرب امارات نے کرونا وائرس کی وَبا کے خلاف جنگ میں نمایاں کردار ادا کرنے والے وزارتِ صحت کے پیشہ ورعملہ ،دوسرے محکموں کے اہلکاروں اور رضاکاروں میں سے مزید 80 ہزار ہیروز کا انتخاب کیا ہے۔اس کا مقصد کووِڈ-19 کی وَبا کے خلاف جنگ میں ان کےنمایاں کردار کو سراہنا ہے۔

یو اے ای کی سرکاری خبررساں ایجنسی وام کے مطابق حال ہی میں ’’فرنٹ لائن ہیروزآفس‘‘ قائم کیا گیا ہے۔اس کا مقصد کووِڈ-19 سے نمٹنے کی جنگ میں قومی تصویر کی تفصیل پیش کرنا ہے۔نیز محاذ اوّل کے ورکروں اور ان کے خاندانوں کو امدادی خدمات مہیا کرنا ہے۔

فرنٹ لائن ہیروز دفتر کے چیئرمین شیخ سلطان بن تہنون نے کہا ہے کہ ’’ہمارے فرنٹ لائن ہیروز نے ملک بھر میں لوگوں کی زندگیوں کے تحفظ کے لیے اپنی صحت اور فلاح کو خطرے میں ڈال کر خدمات انجام دی ہیں۔‘‘

انھوں نے کہا کہ ’’ہم ان کی دلیرانہ کاوشوں کو تسلیم کرتے ہیں اور انھوں نے ہمیں جس سطح کا تحفظ مہیا کیا ہے،اسی سطح کا تحفظ محاذِاوّل ان پیشہ وروں اور ان کے خاندانوں کو مہیا کریں گے۔‘‘

کووِڈ-19 کے خلاف جنگ میں جن محاذ اوّل کے ورکروں کا انتخاب کیا گیا ہے،ا ن میں طبی عملہ ،لازمی خدمات انجام دینے والے افراد ،انسانی امدادی ایجنسیاں ، پولیس اور رضاکار شامل ہیں۔

وام کی رپورٹ کے مطابق فرنٹ لائن ہیروزآفس کے امدادی پروگرام کا آیندہ ہفتوں کے دوران میں اعلان کیا جائے گا اور پھر اس پر عمل درآمد کیا جائے گا۔یہ دفتر جولائی 2020ء میں قائم کیا گیا تھا۔

اس نوزائیدہ ادارے کی ڈائریکٹرجنرل ڈاکٹر ماہا برکات نے وام کو بتایا ہے کہ یہ دفتر مستقل بنیاد پر قائم کیا گیا ہے اور یہ مستقبل میں کسی بھی بحران یا ہنگامی صورت حال میں کام کرے گا۔

اس کے بورڈ آف ڈائریکٹرز میں یواے ای کے متعدد وزراء ، ابوظبی کے محکمہ صحت کے چیئرمین،قومی ایمرجنسی کرائسیس اور ڈیزاسسٹر مینجمنٹ اتھارٹی کے ڈائریکٹر جنرل اور دوسرے اعلیٰ عہدے دار شامل ہیں۔