.

سعودی عرب کی فٹ بال فیڈریشن 2027ء میں ایشیاکپ کی میزبانی کے لیے کوشاں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی فٹ بال فیڈریشن نے (ساف) 2027ء میں ایشیائی کپ فٹ بال ٹورنا منٹ کی میزبانی کے حصول کے لیے اپنی مہم کا آغاز کردیا ہے۔ وہ ’’فارورڈ فارایشیا‘‘ کے نعرے کے تحت یہ ٹورنا منٹ منعقد کرنا چاہتی ہے۔

اے ایف سی ایشیا کپ بین الاقوامی ٹورنا منٹ میں 24 ٹیمیں حصہ لیتی ہیں۔ ایشیائی فٹ بال کنفیڈریشن کے زیر اہتمام یہ ٹورنا منٹ ہر چار سال کے بعد منعقد ہوتا ہے۔ چین 2023ء میں ہونے والے ایشیا کپ کا میزبان ہوگا اور اب سعودی عرب نے 2027ء میں ہونے والے ٹورنا منٹ کا میزبان بننے کے لیے امیدوار ہونے کا اعلان کیا ہے۔

ساف کے صدر یاسر المشعل کا کہنا ہے کہ ’’2027ء کے ایف سی ایشیا کپ کی میزبانی کے لیے ہمارا ویژن ایک ٹورنا منٹ سے بڑھ کر ہے۔ہم ایشیا بھر کے لیے نئے مواقع پیدا کرنا چاہتے ہیں،نئے تجربے ، نئے تبادلے اور نئی توسیع پر توجہ مرکوز کرنا چاہتے ہیں۔ ہم آیندہ مہینوں میں ایشیا کے تمام ’فٹ بال خاندان‘ کے ساتھ اپنے آئیڈیاز کا تبادلہ کرنے کے منتظر ہیں۔‘‘

سعودی عرب کی فٹ بال ٹیم اے ایف سی ایشیا کپ تین مرتبہ جیت چکی ہے اور اس نے پانچ مرتبہ فیفا عالمی کپ ٹورنا منٹ کھیلنے کے لیے کوالیفائی کیا ہے لیکن ساف پہلی مرتبہ ایشیا کپ کی میزبانی کے لیے بہ طور امیدوار سامنے آئی ہے۔

ساف نے اس کی میزبانی کے لیے اپنی مہم کے حصے کے طور پر ایک نیا لوگو متعارف کرایا ہے۔اس میں سعودی عرب کے قومی پرندے عقاب کے سنہرے رنگ کے پَروں پر ایک فٹ بال رکھا ہوا ہے۔ منتظمین کے مطابق اس سے سعودی عرب کے ایشیا کپ کی میزبانی کے لیے جوش وخروش کی عکاسی ہوتی ہے۔

سعودی عرب کی ایشیا کپ کی میزبانی کے لیے مہم ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے ویژن 2030 ہی کا تسلسل ہے۔ اس منصوبے کےتحت سعودی عرب اپنی معیشت کو متنوع بنانے اور تیل کی آمدن پر انحصار کم کرنے کے لیے وسیع البنیاد اصلاحات کررہا ہے۔اس ویژن کے تحت سعودی عرب تفریح ، کھیلوں اور سیاحت سمیت مختلف شعبوں کو ترقی دے رہا ہے اور ان شعبوں میں سرمایہ کاری کی حوصلہ افزائی کررہا ہے۔