.

سعودی عرب: کووِڈ-19 کے 601 نئے کیسوں کی تشخیص،28 مریض چل بسے!

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب نے اتوار کے روز کرونا وائرس کے 601 نئے کیسوں کی تشخیص کا اعلان کیا ہے جبکہ اس مہلک وائرس کا شکار مزید 28 مریض وفات پا گئے ہیں۔

سعودی وزارتِ صحت کے مطابق اب مملکت میں کرونا وائرس کے کل کیسوں کی تعداد 325651 ہوگئی ہے۔ان میں 4228 مریض وفات پا چکے ہیں۔سعودی عرب میں گذشتہ دو ہفتوں سے کووِڈ-19 کے یومیہ کیسوں کی تعداد میں مسلسل کمی ریکارڈ کی جارہی ہے۔

گذشتہ 24 گھنٹے میں ساحلی شہر جدہ میں کووِڈ-19 کے سب سے زیادہ 53 کیس ریکارڈ کیے گئے ہیں۔اس کے بعد الہفوف میں 44 ، مکہ مکرمہ میں بھی 44 اور دارالحکومت الریاض میں 40 نئے کیسوں کی تصدیق ہوئی ہے۔

وزارتِ صحت نے ایک ٹویٹ میں بتایا ہے کہ کووِڈ-19 کا شکار مزید 1034 مریض صحت یاب ہوگئے ہیں۔اس طرح اب تک 302870 مریض تن درست ہوچکے ہیں۔

واضح رہے کہ سعودی عرب میں دو مارچ کو کووِڈ-19 کے پہلے کیس کی تشخیص ہوئی تھی۔یہ پہلا مریض ایران سے لوٹا تھا اور وہیں سے اس وائرس کا شکار ہوا تھا۔اس کے بعدسعودی عرب نے کرونا وائرس کی وبا کو پھیلنے سے روکنے کے لیے مارچ کے اوائل میں اپنی سرحدیں بند کردی تھیں، فضائی سروس معطل کردی تھی۔اب وہ بتدریج ان بندشوں کو ختم کررہا ہے اور سرکاری اور نجی دفاتر کھول دیے گئے ہیں۔

سعودی عرب نے کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے 20 مارچ کو اندرون ملک تمام پروازیں معطل کردی تھیں اور انھیں کوئی سوا دو ماہ کے بعد مئی میں بحال کیا کیا تھا۔تاہم ابھی تک سعودی عرب میں بین الاقوامی پروازوں کی آمد ورفت بحال نہیں کی گئی ہے۔

سعودی عرب کی قومی فضائی کمپنی نے مملکت میں آنے والے بین الاقوامی مسافروں کے لیے تین ستمبر کو کووِڈ-19 کی وَبا سے متعلق رہ نما ہدایات جاری کی تھیں۔سعودی ائیر لائنز نے کرونا وائرس کی وَبا پھیلنے کے بعد مارچ سے اپنی بین الاقوامی پروازیں بند کررکھی ہیں۔

اس نے مستقبل قریب میں ان پروازوں کی بحالی کی صورت میں نئی ہدایات جاری کی ہیں اور تمام بین الاقوامی مسافروں کے لیے ان کی پاسداری لازمی قرار دی ہے۔ کمپنی کے اعلامیے کے مطابق فضائی سفر بحال ہونے کے بعد سعودی عرب میں آنے والے تمام مسافروں کو سات روز تک اپنے گھروں میں الگ تھلگ رہنا ہوگا۔