ایردوآن کی جماعت کاغذ کی حد تک باقی رہ گئی ہے : تُرک اپوزیشن لیڈر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

ترکی میں اپوزیشن کے ایک اہم رہ نما نے صدر رجب طیب ایردوآن کو حکمراں جماعت جسٹس اینڈ ڈیولمپمنٹ پارٹی کے فیصلے انفرادی طور پر کرنے پر تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔ رہ نما نے باور کرایا کہ ترکی کے صدر کی جماعت محض کاغذ کی حد تک پارٹی رہ گئی ہے۔

ریپبلکن پیپلز پارٹی کے سربراہ کمال قلیچ دار اولو نے یہ بات بدھ کے روز انسٹی ٹیوٹ آف ڈیموکریٹک ڈیولپمنٹ کی جانب سے منعقد کیے گئے ایک اجتماع میں کہی۔ اس موقع پر صحافی حضرات اور سیاست دانوں کے علاوہ غیر حکومتی تنظیموں کے نمائندے بھی موجود تھے۔ اولو کا کہنا تھا کہ "جب حکومت انتخابی قوانین کے ساتھ کھلواڑ شروع کر دے تو اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ وہ واقعتا جانے والی ہے۔ جسٹس اینڈ ڈیولپمنٹ نام کی کوئی پارٹی نہیں ہے ہاں صرف ایردوآن ہیں۔ جسٹس اینڈ ڈیولپمنٹ پارٹی صرف کاغذ کی حد تک ہے۔ ایردوآن نقطہ نظر کے اختلاف کو کسی طور درگزر نہیں کرتے"۔

قلیچ دار اولو کے مطابق "ملک میں 1 کروڑ سے زیادہ بے روزگار ہیں ، بے روز گاری کی شرح 30 فی صد کے قریب ہے ، میں نہیں سمجھتا کہ موجودہ حکام کے لیے ان مسائل کو حل کرنا ممکن ہے"۔

ریپبلکن پیپلز پارٹی کے سربراہ نے اپنی گفتگو کے اختتام پر کہا کہ "ہم اس ملک میں جمہوریت لے کر آئیں گے۔ جو لوگ استبدادی نظام کی حمایت کرتے ہیں وہ آئندہ انتخابات میں دیوار سے لگا دیے جائیں گے"۔

مقبول خبریں اہم خبریں