.

فلسطینی اراضی کے ضم کو معلّق کیا جانا حتمی فیصلے میں تبدیل ہونا چاہیے : لودریاں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فرانسیسی وزیر خارجہ جان ایف لودریاں کا کہنا ہے کہ فلسطینی اسرائیلی تنازع کے دو ریاستی حل کا کوئی متبادل نہیں۔ وہ مصر، اردن، فرانس اور جرمنی کے وزراء خارجہ کے اجلاس کے بعد پریس کانفرنس سے خطاب کر رہے تھے۔ لودریاں نے کہا کہ "ہم علاقائی استحکام کو یقینی بنانے کا مصمم ارادہ رکھتے ہیں"۔ انہوں نے واضح کیا کہ بحراین اور امارات کے اسرائیل کے ساتھ امن معاہدے خطے میں استحکام کا باعث ہوں گے۔

اس موقع پر جرمن وزیر خارجہ ہائیکو ماس نے بھی بحرین ، امارات اور اسرائیل کے بیچ امن معاہدوں کا خیر مقدم کیا۔

مصری وزیر خارجہ سامح شکری کے مطابق بحرین اور امارات کے اسرائیل کے ساتھ امن سمجھوتے ایک اہم اقدام ہے۔ انہوں نے ایک جامع حل تک پہنچنے کی اہمیت کو باور کرایا جو فلسطینی عوام کے مطالبات کے پورا ہونے کو یقینی بنائے۔

اس موقع پر اردن کے وزیر خارجہ ایمن الصفدی نے فلسطینی اور اسرائیلی تنازع کے دو ریاستی حل کو باور کرایا۔

مذکورہ اجلاس میں اردن، مصر، فرانس اور جرمنی کے وزراء خارجہ کے علاوہ یورپی یونین کی نمائندہ سوزانا تریسٹل نے بھی شرکت کی۔ اجلاس میں مشرق وسطی میں امن عمل کی سپورٹ کے راستوں پر بات چیت ہوئی تا کہ خطے میں ایک منصفانہ اور جامع امن یقینی بنایا جا سکے۔

اس سے قبل بھی اسی نوعیت کے دو اجلاس منعقد ہو چکے ہیں۔ ان میں پہلا اجلاس فروری 2020ء میں میونخ اور دوسرا جولائی 2020ء میں وڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے منعقد ہوا تھا۔