.

ناگورنوقراباغ میں آذربائیجان اور آرمینیا میں جھڑپیں، فوجی ہلاکتوں کی تعداد 58 ہوگئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

آذربائیجان سے الگ ہونے والے متنازع علاقے ناگورنو قراباغ میں آذری فوج سے جھڑپوں میں 27 علاحدگی پسند جنگجو ہلاک ہوگئے ہیں۔اس علاقے کے حکام کا کہنا ہے کہ اب تک لڑائی میں ان کے 58 فوجی ہلاک ہوچکے ہیں۔

باکو میں آذر بائیجان اور یروان میں آرمینیا کے حکام نے بتایا ہے کہ سوموار کو سارادن متحارب فورسز کے درمیان جھڑپیں جاری رہی ہیں۔قراباغ کی وزارت دفاع نے دعویٰ کیا ہے کہ اس کی فورسز نے جنوبی سیکٹر میں آذر بائیجان کی فوج کا ٹینکوں سے حملہ پسپا کردیا ہے۔

آذربائیجان کی وزارت دفاع کا کہنا ہے کہ اس کے فوجیوں نے دشمن کے توپ خانے کے متعدد یونٹوں کو تباہ کردیا ہے۔اتوار کی صبح سے جاری لڑائی میں اب تک 67 ہلاکتیں ہوچکی ہیں۔ان میں نو شہری شامل ہیں۔گولہ باری سے آذر بائیجان میں سات اور آرمینیا میں دو شہری مارے گئے ہیں۔

واضح رہے کہ آرمینیا اور آذربائیجان کے درمیان 1990ء کے عشرے سے علاقائی تنازع جاری ہے۔تب ناگورنو قراباغ نے آذر بائیجان کے خلاف جنگ کے بعد اپنی آزادی کا اعلان کردیا تھا۔اس لڑائی میں 30 ہزار افراد ہلاک ہوگئے تھے۔

لیکن قراباغ کی آزادی کو کسی بھی ملک نے تسلیم نہیں کیا ہے، حتیٰ کہ اس کو آرمینیا بھی خود مختار علاقہ تسلیم نہییں کرتا ہے۔عالمی برادری اس کو آج بھی آذر بائیجان کا حصہ سمجھتی ہے۔