.

روسی مداخلت اور ہیلری اسکینڈل کے بارے میں دستاویزات کی رازداری بڑھا دی ہے: ٹرمپ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا ہے کہ انہوں نے صدارتی انتخابات میں روسی مداخلت اور سابق وزیر خارجہ ہیلی کلنٹن کی جانب سے سرکاری ای میلز کے لیے نجی Server کے استعمال کی تحقیقات سے متعلق تمام دستاویز کی رازداری کو بڑھا دیا ہے۔

بدھ کے روز اپنے سرکاری ٹویٹر اکاؤنٹ پر کی گئی ٹویٹ میں امریکی صدر نے کہا کہ "میں امریکی تاریخ کے سب سے بڑے سیاسی جرم یعنی روسی دھوکے اور ہیلری کلنٹن کے نجی ای میل کے اسکینڈل سے متعلق تمام دستاویزات کی رازداری کو بڑھانے کی مکمل طور پر اجازت دے دی ہے ... کوئی وضاحت نہی!".

امریکی تحقیقی ادارے (FBI) کے ٹیکسٹ میسجز کے متعلق کچھ عرصہ قبل سامنے آنے والے انکشافات سے یہ بات معلوم ہوئی تھی کہ 2016ء میں ٹرمپ کی مہم کی تحقیقات کرنے والے ایف بی آئی کے ایجنٹس نے اس ذمے داری کے واسطے پروفیشنل لائیبلٹی انشورنس خرید لی تھی۔ یہ اقدام اس کے اِفشا ہونے اور ان کے خلاف قانونی کارروائی کے خوف سے کیا گیا۔

عام طور پر یہ انشورنس ایسی فاش غلطیوں کے واقع ہونے کی صورت میں خریدی جاتی ہے جن پر احتساب اور زر تلافی لازم آئے۔

انگریزی اخبارThe Federalist نے اس حوالے سے کئی ٹیکسٹ میسجز کا متن شائع کیا۔ اس حوالے سے 10 جنوری 2017ء کے ایک میسج میں ایف بی آئی کے ایک ایجنٹ نے کہا کہ "ہم سب نے جا کر پروفیشنل لائیبلٹی انشورنس خریدی"۔

رپورٹ میں ان میسجز کا بھی حوالہ دیا گیا جن میں یہ بات سامنے آئی کہ ایف بی آئی کے ایجنٹس کا خیال تھا کہ 2016ء کے انتخابات کے دوران ایف بی آئی میں بعض ذمے داران وزیر خارجہ ہیلری کلنٹن کی جانب جھکاؤ رکھتے تھے۔

ایک مراسلے میں یہ بات ظاہر ہوئی کہ ایف بی آئی کے ایجنٹس 5 جنوری 2017ء کو وائٹ ہاؤس میں ایک بریفنگ پر تبصرہ کر رہے ہیں۔ اس بریفنگ میں اس وقت کے صدر باراک اوباما، نائب صدر جو بائیڈن اور قانون نافذ کرنے والے اور انٹیلی جنس اداروں کے کئی سینئر ذمے داران شریک تھے۔