.

سب سے پہلے کرونا کے خلاف جنگ 2021ء کے اختتام تک امیر ممالک جیتیں گے: بل گیٹس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

بین الاقوامی شہرت یافتہ ارب پتی بل گیٹس نے کہا ہے کہ اگر کرونا ویکسین کی بروقت تیاری، اس کی کامیابی اور وسیع پیمانے پر استعمال کی صورت میں صرف امیر ممالک میں سنہ 2021ء کے اختتام تک کرونا کی وبا کو شکست دی جاسکے گی۔

مائیکرو سافٹ کمپنی کے بانی بل گیٹس کا کہنا ہے کہ کرونا کی وبا سے سب سے پہلے دولت ممالک، اس کے بعد ترقی پذیر اور آخر میں غیر ترقی یافتہ ممالک نجات حاصل کریں گے۔

ان کا کہنا ہے کہ کرونا کو شکست دینے کا انحصار اس کی ویکسین کی تیاری، اس کی کامیابی اور وسیع پیمانے پر تقسیم پر منحصر ہے۔

وال اسٹریٹ جنرل کو دیئے گئے ایک انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ بہت سے ممالک میں کرونا کی ویکسین کی تیاری کے دعوے کیے جا رہے ہیں مگر ان کی کامیابی کا فی الحال کچھ نہیں کہا جاسکتا۔ زندگی معمول پر آنے میں ابھی وقت لگے اور اور سب سے پہلے معمول پر زندگی صرف امیر ممالک میں آئے گی۔ ان کا کہنا تھا کہ کرونا کی تیاری کے بعد اس کی امریکا میں تقسیم اور دوسرے ممالک کو فراہمی میں اختلافات بھی پیدا ہوسکتے ہیں۔

خیال رہے کہ بل گیٹس بل اور میلنڈا گیٹس فاؤنڈیشن کو 36 بلین ڈالر فراہم کیے ہیں۔ اس امداد سے غریب ممالک اور صحت کے مسائل سے دوچار ممالک کو کرونا کی روک تھام میں تعاون فراہم کیا جائے گا۔