.

سعودی عرب میں بازوں کی خریدو فروخت جاری، مزید ایک ملین ریال کے شاہین نیلام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں ملک کی سطح پر پہلی بار 'باز' کی نیلامی کے پروگرام میں 'شاہینوں' کی خریدو فروخت جاری ہے۔ گذشتہ روز ہونےوالی نیلامی میں مزید ایک ملین ریال مالیت کے باز خریدے گئے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ‌ کے مطابق سعودی عرب کے دارالحکومت الریاض کے شمال میں ملھم کے مقام پر شاہ عبدالعزیز فیسٹیول کے ضمن میں 'سعودی باز کلب' کے زیراہتمام باز فروشوں کے درمیان سخت مقابلہ دیکھنے میں آیا۔ گذشتہ ہفتے شروع ہونے والی اس نیلامی میں 3 لاکھ 66 ہزار ریال مالیت کے بازوں‌ کی خریدو فروخت کی گئی تھی جب کہ گذشتہ روز مزید ایک ملین ریال کے باز فروخت کیے گئے۔

شاہین فروش صالح المطیری نے بتایا کہ وہ علی الصباح اچھی خصوصیات کے حامل شاہین کی تلاش کے لیے ملھم کےمقام پر بولی کی تلاش کے لیے روانہ ہوا۔بدھ کے روز نیلامی کے لیے پیش کردہ ایک شاہین کی بولی لگائی گئی۔ میں نے اس سے قبل 6 لاکھ ریال کا سب سے گراں قیمت شاہین خرید رکھا تھا جب کہ 25 سال کے عرصے میں تین سے چار ملین ریال کے بازوں کی خریدو فروخت کی تھی۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ سے بات کرئے المطیری نے بتایا کہ شاہینوں میں دلچسپی اسے بچپن ہی سے تھی۔ المطیری نے کل جمعہ کے روز جو شاہین خرید کیا ہے۔ اس کی اونچائی 16 انچ اور وزن 1122 گرام ہے۔ اس کی ایک خاصیت یہ ہے کہ اسے نیلامی میں پیش کیے جانےسے صرف ایک روز قبل شکار کیا گیا تھا۔ اس شاہین نے ایشیا اور یورپ سے پرواز کی اور سعودی عرب کے علاقے حفرالباطن میں الطاروق عوض عبیدی الشمری کے ہاتھ لگ گیا۔

گذشتہ روز ہونے والی نیلامی میں مجموعی طور پر 9 لاکھ 96 ہزار ریال کے شاہین فروخت کیے گئے۔ ان میں المطیری نے چھ لاکھ 50 ہزار ریال میں ایک شاہین خریدا جو اب تک کی سب سے بڑی بولی ہے۔ عبداللہ نعیس الشمری نے ایک دوسرا شاہین پیش کیا جس کی لمبائی 15 انچ اور وزن 1007 گرام تھا، اسے ایک لاکھ ریال میں فروخت کیا گیا۔