.

مائیک پومپیو کی ایشیائی ملکوں کے دورے کے پہلے مرحلے میں بھارت آمد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو ایشیائی ممالک کے پانچ روزہ دورے کے پہلے مرحلے میں سوموار کو بھارت کے دارالحکومت نئی دہلی میں پہنچ گئے ہیں۔ان کے اس دورے کا مقصد چین کے خطے میں بڑھتے ہوئے اثرونفوذ کے پیش نظر تزویراتی تعلقات کو مضبوط بنانا ہے۔

امریکی وزیردفاع مارک ایسپر بھی مائیک پومپیو کے ہمراہ دوروزہ دورے پر بھارت آئے ہیں۔وہ بھارت کی چین کے ساتھ جون میں سرحدی کشیدگی کے تناظر میں میزبان ملک کی اعلیٰ قیادت سے دوطرفہ تعلقات پر تبادلہ خیال کریں گے۔

مائیک پومپیو نئی دہلی میں بھارتی وزیر خارجہ سبرامنیم جیشنکر کے ساتھ ملاقات کرنے والے تھے۔ دونوں امریکی وزراء منگل کو بھارتی وزیر دفاع راجناتھ سنگھ اور وزیرخارجہ شنکر کے ساتھ ایک مشترکہ اجلاس میں شرکت کریں گے۔

بھارتی وزرارت خارجہ کے ایک اعلامیے کے مطابق مائیک پومپیو اور مارک ایسپر وزیراعظم نریندرمودی سے بھی ملاقات کریں گے۔امریکی وزیر دفاع الگ سے اپنے بھارتی ہم منصب سے دونوں ملکوں کی مسلح افواج کے درمیان دوطرفہ تعاون بڑھانے سے متعلق امور پر بات چیت کریں گے۔

حکام کے مطابق دنیا کی دو بڑی جمہوریتیں ہونے کے دعوے دار دونوں ملک ’جغرافیائی مکانی انٹیلی جنس‘ کی شراکت کے ایک سمجھوتے پر دست خط بھی کریں گے۔اس کے تحت امریکا بھارت کو جدید میزائل ٹیکنالوجی مہیا کرے گا۔

اس کے علاوہ وہ دونوں ملکوں میں انٹیلی جنس شیئرنگ ، مشترکہ جنگی مشقوں اور اسلحہ کی فروخت سمیت مختلف دفاعی امور پر بات چیت کریں گے۔ان میں امریکا کی جانب سے ایف 18 لڑاکا جیٹ کی بھارت کو ممکنہ فروخت کامعاملہ بھی شامل ہے۔

مائیک پومپیو اس کے بعد سری لنکا اور مالدیپ جائیں گے۔ان دونوں ملکوں میں چین نے بھاری سرمایہ کاری کی ہے اور انفرااسٹرکچر کے بہت سے منصوبے مکمل کیے ہیں جس پر بھارت اور امریکا دونوں ہی اپنے تئیں مشوش ہیں۔ امریکی وزیرخارجہ ان تینوں ملکوں کے بعد انڈونیشیا کا دورہ کریں گے۔ وہ امریکا میں تین نومبر کو ہونے والے صدارتی انتخابات سے صرف ایک ہفتہ قبل یہ دورہ کررہے ہیں۔