.

کروناوَبا؛2020ء کو انتہائی چیلنج والے سال کے طورپر یاد رکھا جائے گا:سعودی وزیر خزانہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے وزیر خزانہ محمد الجدعان نے کہا ہے کہ کرونا وائرس کی وَبا کے نتیجے میں اقتصادی ، سماجی اور صحت کی بے نظیرمشکلات کا سلسلہ جاری ہے،اس کے پیش نظر 2020ء کو ہمیشہ حکومتوں ، معیشتوں اور افراد کی یادداشت میں سب سے زیادہ چیلنج والے سال کے طور پر یاد رکھا جائے گا۔

محمد الجدعان تیئسیویں عرب ،جرمن بزنس فورم کی افتتاحی تقریب سے خطاب کررہے تھے۔انھوں نے کہا کہ گروپ 20 کے رکن ممالک نے اس سال کرونا وائرس کی وَبا کے اثرات سے نمٹنے کے لیے 11 ہزار ارب ڈالر (11ٹریلین) عالمی معیشت میں شامل کیے ہیں۔

سعودی عرب اس سال گروپ 20 کے صدر ملک کی حیثیت سے کرونا کی وبا سے نمٹنے اور عالمی معیشت کی بحالی میں مدد دینے کے لیے کاوشوں میں قائدانہ کردار ادا کررہا ہے۔کووِڈ-19 کے بحران کی وجہ سے عالمی معیشت کو کسادبازاری کا سامنا ہے اور ماہرین کا کہنا ہے کہ اس کے اثرات ایک صدی قبل کی عالمی کساد بازاری ایسے ہوسکتے ہیں۔

اس بحران کے باجود سعودی وزیرخزانہ کا کہنا ہے کہ عالمی برادری نے گروپ 20 کے زیرقیادت انسانی زندگیوں اور ان کے معاش کو بچانے کے لیے تیزی سے اقدامات کیے ہیں۔

جی 20 نے کووِڈ-19 سے نمٹنے کے لیے صحتِ عامہ کے عالمی نظام کو 21 ارب ڈالر کی خطیر رقم مہیا کرنے کے وعدے کیے ہیں۔اس کے علاوہ معاشی طور پر زبوں حال ممالک کے قرضوں کی ادائی مؤخر کرنے کے لیے 14 ارب ڈالر دیے ہیں۔یہ رقم جی 20 کے قرضہ سروس معطلی اقدام کے تحت دی گئی ہے۔