.

سعودی عرب اور یواے ای دنیا کے 10محفوظ ترین ممالک میں شامل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات دنیا میں امن وامان کی صورت حال کے حوالے سے کیے گئے نئے گیلپ پول میں دنیا کے دس محفوظ ترین ممالک میں شامل قرار پائے ہیں۔

گیلپ کے 2020ء کے امن وامان کے اشاریے میں دنیا کے 144 ممالک کے لوگوں سے ان کے خود کو محفوظ سمجھنے کے بارے میں ادراک واحساس کی جانچ کی گئی ہے۔ان سے مقامی پولیس پر اعتماد ، رات کے وقت تنہائی میں پیدل چلنے کے دوران میں احساسِ تحفظ ،حملوں، ڈکیتی اورچوری کی وارداتوں کے بارے میں رائے پوچھی گئی تھی۔

اس سروے میں شریک لوگوں سے درج ذیل سوال پوچھے گئے تھے:کیا آپ شہر میں یا جہاں آپ رہتے ہیں، رات کے وقت اکیلے چلتے ہوئے خود کو محفوظ سمجھتے ہیں؟ گذشتہ 12 ماہ کے دوران میں آپ پر کوئی حملہ کیا گیا ہے یا آپ کے ساتھ ڈکیتی کی کوئی واردات ہوئی ہے؟آپ جس شہر یا علاقے میں رہتے ہیں،کیاآپ کو وہاں کی مقامی پولیس پراعتماد ہے؟

اس مجموعی اشاریے میں سنگاپور گذشتہ برسوں کی طرح پہلے نمبر پررہا ہے لیکن اس مرتبہ اس کے ساتھ ترکمانستان بھی پہلے نمبر پر ہے۔چین دوسرے نمبر پر رہا ہے۔دنیا کے محفوظ ترین ممالک کی اس فہرست میں آئس لینڈ اور کویت تیسرے نمبر پر رہے ہیں۔

متحدہ عرب امارات ، آسٹریا ، ناروے ، سوئٹزرلینڈ اور ازبکستان اس فہرست میں چوتھے نمبر پر ہیں۔ ان ممالک کی 92 فی صد آبادی نے خود کو محفوظ قرار دیا ہے۔ سعودی عرب دو اور اسلامی ممالک مصر اورانڈونیشیا کے ساتھ ساتویں نمبر پر ہے۔ان تینوں ملکوں کے 89 فی صد شہریوں کا کہنا ہے کہ وہ خود کو محفوظ تصور کرتے ہیں۔امریکا کے 85 فی صد اور برطانیہ کے 83 فی صد شہریوں نے اپنے اپنے ملک میں خود کو محفوظ قرار دیا ہے۔

اس سروے میں شامل ممالک میں سے وینزویلا ، وسط افریقا میں واقع گیبون اور جنگ زدہ افغانستان کے شہریوں نے خود کو سب سے زیادہ غیر محفوظ قرار دیا ہے۔مشرقِ اوسط اور شمالی افریقا کے خطے میں واقع ممالک میں لیبیا ، مراکش اور یمن امن وامان کی صورت حال کے ضمن میں سب سے غیر محفوظ قرار پائے ہیں۔لیبیا اور یمن میں اس وقت خانہ جنگ جاری ہے اور وہاں امن وامان کی صورت حال مخدوش ہے۔

رات کے وقت تنہا پیدل چلنا

یو اے ای اور ناروے میں رات کے وقت تنہا محفوظ پیدل چلنے کے اشاریے میں تیسرے نمبر پر رہے ہیں۔ان ممالک کے 92 فی صد شہریوں کا کہنا ہے کہ وہ رات کے وقت تنہا چہل قدمی کے دوران میں خود کو محفوظ خیال کرتے ہیں۔بہ الفاظ دیگر ان کا کہنا ہے کہ انھیں کوئی ڈر،خوف نہیں ہوتا ہے۔اس اشاریے میں کویت چوتھے اور سعودی عرب پانچویں نمبر پر ہے۔

اس اشاریے کی درجہ بندی میں جنوبی افریقا ، وینزویلا ، گیبون اور افغانستان سب سے آخر میں ہیں۔وینزویلا کے صرف 29 فی صد اور افغانستان کے 12 فی صد شہریوں کا کہنا ہے کہ وہ رات کے وقت اپنے اقامتی علاقوں میں پیدل چلتے ہوئے خودکو محفوظ تصور کرتے ہیں۔

اس سروے میں دنیا کے 144 ممالک اور علاقوں کے قریباً ایک لاکھ 75 ہزار بالغ افراد سے انٹرویوز کیے گئے تھے۔2019ء میں کیے گئے اس سروے میں ہر ملک سے تعلق رکھنے والے قریباً ایک ہزار بالغ افراد کو شامل کیا گیا تھا۔