.

صنعاء میں حوثیوں کی یہود اورامریکا مخالف تقریب ،واشنگٹن میں یمنی سفارت خانہ کی مذمت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے دارالحکومت صنعاء میں ایران کے حمایت یافتہ حوثی ملیشیا نے پولیس اکیڈیمی میں منعقدہ گریجوایشن تقریب میں امریکا مخالف اور یہود مخالف نعرے بازی کی ہےاور نازی جرمنوں ایسی فوری وردی میں ملبوس ہوکر ان ایسے فوجی کرتبوں کا مظاہرہ کیا ہے۔ان کی اس حرکت کی واشنگٹن میں یمنی سفارت خانے نے مذمت کی ہے۔

حوثیوں کی اس تقریب کی یمنی سفارت خانے نے ایک ویڈیو ٹویٹر پر جاری کی ہے۔اس میں مسلح حوثی جنگجو نازی سلیوٹ کررہے ہیں اور وہ ’’مرگ بر امریکا،اسرائیل مردہ باد اور یہودیوں پر لعنت‘‘ کے نعرے لگا رہے ہیں۔

سفارت خانے نے کہا ہے کہ ’’ایران کے حمایت یافتہ حوثی جنگجو ملیشیاؤں کے روایتی لباس میں ملبوس ہونے کے بجائے نازیوں ایسی ایک باوردی پیشہ ور فوج نظرآنے کی کوشش کررہے ہیں۔یہ خواہ کوئی بھی روپ دھار لیں ،یہ بہر صورت یمن میں لوگوں کو جبروتشدد کا نشانہ ہی بنائیں گے۔‘‘

واشنگٹن میں یمنی سفارت خانے نے عالمی برادری سے مطالبہ کیا ہے کہ ’’وہ حوثیوں کے اس ’’عریاں‘‘ اور منافرت پر مبنی کردار کی مذمت کریں۔اگر اس گروپ کو روکا نہیں گیا تو یہ یمن کو ایک پولیس ریاست میں تبدیل کردے گا۔‘‘

واضح رہے کہ حوثی ملیشیا نے حالیہ ہفتوں کے دوران میں سعودی عرب اور یمن میں اپنے کنٹرول سے باہر علاقوں پر ڈرون اور بیلسٹک میزائلوں سے حملے تیز کررکھے ہیں۔

ایران حوثیوں کی یمن کی بین الاقوامی سطح پر تسلیم شدہ صدر عبد ربہ منصور ہادی کی حکومت کے خلاف ستمبر 2014ء میں مسلح بغاوت سے لے کر اب تک مکمل پشتیبانی کرتا چلا آرہا ہے۔وہ حوثی ملیشیا کو اسلحہ اور مالی امداد کے علاوہ عسکری مشاورت بھی مہیا کررہا ہے اور سفارتی محاذ پر اس کی وکالت کررہا ہے۔