.

سعودی وزیرخارجہ نے اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو کے دورۂ نیوم کی تردید کردی

امریکی وزیرخارجہ کی ولی عہد سے ملاقات میں مَیں بھی شریک تھا،وہاں کوئی اسرائیلی موجود نہیں تھا:شہزادہ فیصل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے وزیرخارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان نے اسرائیلی میڈیا کی وزیراعظم بنیامین نیتن یاہو کی سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان سے نیوم میں ملاقات سے متعلق خبروں کی تردید کردی ہے۔

اسرائیل کے آرمی ریڈیو اور کان ریڈیو، دونوں نے یہ اطلاع دی ہے کہ اسرائیلی وزیراعظم بنیامین نیتن یاہو اور خفیہ ایجنسی موساد کے سربراہ یوسف میرکوہن نے تل ابیب سے نیوم کا خفیہ دورہ کیا ہے اور وہاں سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان سے خفیہ ملاقات کی ہے۔برطانوی خبررساں ایجنسی رائیٹرز نے بھی اس ملاقات کی اطلاع دی ہے۔

سعودی وزیرخارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان نے العربیہ سے گفتگو کرتے ہوئے ان اطلاعات کو مسترد کردیا ہے۔انھوں نے بتایا ہے کہ ’’میں نے نیوم کے ہوائی اڈے پر امریکی وزیرخارجہ مائیک پومپیو کا خیرمقدم کیا تھا اور انھیں وہیں سے رخصت کیا تھا۔میں ان کی ولی عہد سے ملاقات میں بھی شریک تھا۔وہاں کوئی اسرائیلی موجود نہیں تھا۔‘‘

انھوں نے الگ سے ایک ٹویٹ میں کہا ہے کہ ’’میں نے سیکریٹری مائیک پومپیو کے حالیہ دورہ کے موقع پر سعودی ولی عہد اوراسرائیلی عہدے داروں کے درمیان مبیّنہ ملاقات سے متعلق پریس رپورٹس ملاحظہ کی ہیں۔ایسی کوئی ملاقات نہیں ہوئی تھی اور جس ملاقات کا ذکر کیا جارہا ہے،اس میں صرف امریکی اور سعودی عہدے دار موجود تھے۔‘‘

شہزادہ فیصل فروری میں بھی سعودی ولی عہد اور اسرائیلی وزیراعظم کے درمیان ملاقات کی خبروں کی تردید کرچکے ہیں۔